تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2018

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
بینگن اور کھمبی روزانہ کیوں کھانا چاہیے ؟
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

منگل 2 ربیع الثانی 1440هـ - 11 دسمبر 2018م
آخری اشاعت: پیر 22 محرم 1438هـ - 24 اکتوبر 2016م KSA 16:43 - GMT 13:43
بینگن اور کھمبی روزانہ کیوں کھانا چاہیے ؟
العربیہ ڈاٹ نیٹ – عبير طايل

کھمبی اور بینگن کو انسانی جسم کے لیے غذائی فوائد سے بھرپور شمار کیا جاتا ہے جو قوت مدافعت کو طاقت دینے اور بیماریوں سے تحفظ فراہم کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

صحت کے امور سے متعلق ویب سائٹ " بولڈ اسکائی" کے مطابق کھمبی وٹامن"B2" ، "B6"،"B9" اور"B5" سے بھرپور ہوتی ہے۔ علاوہ ازیں اس میں تانبا ، فولاد ، میگنیشیئم ، جست ، فاسفورس اور پوٹاشیئم جیسے معدنیات کے ساتھ ساتھ ریشہ موجود ہوتا ہے۔ کھمبی ان غذائی عناصر میں سے ہے جو بہت کم حرارے رکھتے ہیں۔ کھمبی میں پانی کی بڑی مقدار اور سوڈیوم ، کاربوہائیڈریٹ اور چکنائی کی بہت کم مقدار پائی جاتی ہے۔

کھمبی میں کیلے سے زیادہ پوٹاشیئم پایا جاتا ہے جو فشار خون کی سطح کو کم کرنے میں مدد دیتا ہے اور دل کو تندرست اور توانا رکھتا ہے۔

کھمبی خون کے خلیوں کو تحفظ فراہم کرتی ہے اور سرطان کے خلیوں کے خلاف مدافعت کو بڑھاتی ہے اور مدافعت ختم ہوجانے کے مرض "ایڈز" سے بھی حفاظت کرتی ہے۔ یہ بعض نوعیت کے نفسیاتی مریضوں کے لیے بھی بہت مفید ہے۔ جو کوئی متناسب اور خوب صورت جسم کو برقرار رکھنا چاہتا ہے اس کو روزانہ کھمبی ضرور کھانا چاہیے۔

جہاں تک بینگن کا تعلق ہے تو یہ بھی بہت سے مفید غذائی عناصر پر مشتمل ہوتا ہے۔ اس کے اندر اینٹی آکسیڈنٹ کی خصوصیات پائی جاتی ہیں۔ یہ کیفک ایسڈ ، کلوروجینک ایسڈ اور نیسونین پر مشتمل ہوتا ہے جو طاقت ور اینٹی آکسیڈنٹ شمار کیے جاتے ہیں۔

متعدد تحقیقوں سے ثابت ہوا ہے کہ بینگن خون میں کولسٹرول کی سطح کو کم کرنے اور خون کی گردش کو بہتر بنانے کی قدرت رکھتا ہے جس سے خون کی گردش کا نظام عمومی صورت میں اچھا ہوجاتا ہے۔ اگر آپ صحت مند دل سے لطف اندوز ہونا چاہتے ہیں تو بینگن کو خود پر لازم کرلیں۔

بینگن میں بڑی مقدار میں ریشہ بھی موجود ہوتا ہے جو ہاضمے کے عمل میں مدد کرتا ہے۔

علاوہ ازیں بینگن میں وٹامن"B" بھی پایا جاتا ہے جو انسانی جسم میں اعصابی نظام کو مضبوط بناتا ہے اور جسم کو توانائی فراہم کرتا ہے۔ اس سے جسم میں ہارمون کا توازن درست رہتا ہے اور انسانی جگر کے کام کو بھی بہتر بناتا ہے۔

اس میں پایا جانے والا نیسونین دماغ کی سرگرمیوں اور کام کو جلا بخشتا ہے۔

بینگن کے فوائد میں سے یہ بھی ہے کہ اس سے خون میں گلوکوز کی مقدار منظم رہتی ہے اور جسم میں نقصان دہ کولسٹرول کی سطح کم رہتی ہے۔

بینگن میں کم حرارے پائے جاتے ہیں۔ اسی واسطے وزن کم کرنے کے لیے اپنائے جانے والے غذائی نظام میں بینگن کو شامل کرنے کی ہدایت کی جاتی ہے کیوں کہ یہ چربی کو بھی کم کرتا ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند