تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
حجاج کرام سے فرانسیسی میں مخاطب ہونے والی سعودی خاتون اہل کار
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 21 محرم 1441هـ - 21 ستمبر 2019م
آخری اشاعت: جمعرات 13 ذوالحجہ 1440هـ - 15 اگست 2019م KSA 11:37 - GMT 08:37
حجاج کرام سے فرانسیسی میں مخاطب ہونے والی سعودی خاتون اہل کار
العربیہ ڈاٹ نیٹ - ناديہ الفواز

حجاج کرام کے لیے خدمت میں مصروف سعودی سرکاری سیکٹروں میں کام کرنے والے متعدد مرد اور خواتین اہل کار اللہ کے مہمانوں کے ساتھ کئی زبانوں میں بات چیت کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اس امر نے حجاج کرام اور ان کے لیے خدمات انجام دینے والوں کے درمیان رابطہ کاری کے میدان کو رواں سال بھرپور بنا دیا۔

ایسے ہی تربیت یافتہ اہل کاروں میں "سپاہی" کا منصب رکھنے والی سعودی نوجوان خاتون احلام عبادی سندی بھی ہیں۔ وہ محکمہ پاسپورٹ میں اپنی ذمے داریاں انجام دیتی ہیں۔ احلام پوری روانی اور مہارت سے فرانسیسی زبان بولتی ہیں۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے احلام نے بتایا کہ " میں نے 13 کی عمر میں فرانسیسی زبان سیکھی تھی جب میرے والد کا 3 برس کے لیے فرانس میں تقرر ہوا تھا۔ میں سعودی قونصل خانے کے تحت زیر تعلیم تھی اور نصاب سعودی طرز پر تھا۔ اس کے باوجود وہاں رہتے ہوئے میں نے اور میرے والدین نے فرانسیسی زبان سیکھ لی۔ اس حوالے سے الجزائر اور تیونس کے اساتذہ نے میری بہت حوصلہ افزائی کی جس پر میں ان کی تہِ دل سے شکر گزار ہوں"۔

احلام کے مطابق یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد وہ فرانسیسی زبان سے مستفید نہ ہو سکیں کیوں کہ ان کے کام کے شعبوں میں صرف انگریزی زبان کا سہارا لیا جاتا تھا اور انگریزی بول چال اور تحریر میں بھی مہارت رکھتی ہیں۔ البتہ سعودی پاسپورٹ ڈائریکٹریٹ نے احلام کو ایسا حقیقی موقع فراہم کیا جہاں وہ خوب صورت فرانسیسی زبان کو کام میں لا سکیں اور حجاج کرام سے بات چیت کر سکیں۔ اس بات چیت میں ان کا خیر مقدم اور ضروریات پوری کرنے میں ان کی معاونت شامل ہے۔ احلام کہتی ہیں کہ اس کے جواب میں حجاج کرام کی ایک مسکراہٹ اور دعا ہی سب سے بڑی عطا ہے۔

احلام نے بتایا کہ حج سیزن کے دوران ایک فرانسیسی خاتون عازم حج کی یادوں کو وہ کبھی فراموش نہیں کر سکیں گی۔ پاسپورٹ سے متعلق کارروائی پوری ہونے کے بعد اس فرانسیسی خاتون نے مجھے انتہائی مسرت کے ساتھ گلے لگایا اور میرے لیے دعا اور تشکر کا اظہار کرنے لگی۔ اس نے احلام سے یہ بھی پوچھا کہ کیا وہ سعودی ہیں اور انہیں فرانسیسی زبان کیسے آتی ہے؟".

احلام عبادی سندی نے واضح کیا کہ حج سیزن کے دوران سیکورٹی سیکٹر میں کام کرنے والے مرد اور خواتین کے لیے زبانوں کا سیکھنا انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ بالخصوص پاسپورٹ سیکٹر اور ایئرپورٹ سروسز میں ... ان کے علاوہ اللہ کے مہمانوں کی خدمت کے متعدد مقامات پر ان زبانوں کو جاننا ضروری بن جاتا ہے۔ احلام کہتی ہیں کہ "حج کے دوران مختلف نوعیت کے واقعات پیش آتے ہیں۔ کوئی اپنا پاسپورٹ کھو دیتا ہے تو کوئی راستہ بھول جاتا ہے .. ایسے میں ہمیں ان کی مشکلات کو سمجھنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ متعدد زبانیں جاننا دنیا بھر کے مختلف ممالک سے آئے ہوئے حجاج کے ساتھ مثبت رابطے کو یقینی بنانے کا بہترین ذریعہ ہے"۔