تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ایران: فردو جوہری تنصیب پر ایس-300 میزائل دفاعی نظام نصب
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

منگل 1 رجب 1441هـ - 25 فروری 2020م
آخری اشاعت: پیر 25 ذیعقدہ 1437هـ - 29 اگست 2016م KSA 15:24 - GMT 12:24
ایران: فردو جوہری تنصیب پر ایس-300 میزائل دفاعی نظام نصب
تہران ۔ ایجنسیاں

ایران نے روس سے حال ہی میں ملنے والے طویل فاصلے کے میزائل دفاعی نظام ایس-300 کو فردو میں واقع جوہری تنصیب کے تحفظ کے لیے نصب کردیا ہے۔

ایران کے فضائی دفاع کے کمانڈر جنرل فرزاد اسماعیلی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''ہرقسم کے حالات میں جوہری تنصیبات کے تحفظ کو ترجیح حاصل ہے۔آج ایران کی فضا خطے میں سب سے زیادہ محفوظ ہوگئی ہے''۔

فردو میں ایک ٹرک پر لدے ایس-300 میزائل دفاعی نظام کی ایک ویڈیو بھی جاری کی گئی ہے۔اس میں اس کے میزائل لانچروں کے آسمان کی جانب رُخ دیکھے جاسکتے ہیں۔اس کے ساتھ دوسرے دفاعی ہتھیار بھی ہیں۔

یہ ویڈیو ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی فضائیہ کے کمانڈروں کے ایک اجتماع میں تقریر کے چند گھنٹے کے بعد جاری کی گئی ہے۔اس میں انھوں نے اس بات پر زوردیا ہے کہ ایران کی فوجی قوت دفاعی مقاصد کے لیے تھی۔

انھوں نے کہا کہ ''ایس-300 نظام یا فردو کی جگہ کی مسلسل مخالفت دشمن کی سفاکیت کی چند ایک مثالوں میں سے ہے۔ایس-300 نظام ایک دفاعی نظام ہے اور یہ حملے کے لیے نہیں ہے لیکن اس کے باوجود امریکیوں نے ہر ممکن کوشش کی کہ ایران کو یہ نظام نہ مل سکے''۔

واضح رہے کہ ایران نے قُم شہر کے نزدیک واقع فردو کی جوہری تنصیب میں جنوری کے بعد سے یورینیم کی افزودگی کا کام بند کردیا ہے اور یہ اقدام ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان گذشتہ سال جولائی میں طے شدہ جوہری معاہدے پر عمل درآمد کے بعد کیا گیا تھا۔

اس تاریخی معاہدے کی شرائط کے تحت ایران نے اپنی 19 ہزار سینٹری فیوجز مشینوں میں سے بیشتر کو ناکارہ بنا دیا ہے۔ان مشینوں کے ذریعے ہی یورینیم کو افزودہ کیا جاسکتا ہے۔اب ایران کے پاس تحقیقی مقاصد کے لیے صرف پانچ ہزار فعال سینیٹری فیوجز مشینیں رہ گئی ہیں۔ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان طے شدہ اس معاہدے کے تحت تہران پر عاید بعض بین الاقوامی پابندیوں کا خاتمہ ہوا تھا اور اس کے امریکا اور دوسرے ممالک میں منجمد اثاثے غیر منجمد کردیے گئے تھے۔

  • ایرانی صدر حسن روحانی اور وزیر دفاع حسین دہقان جدید باور 373 میزائل دفاعی نظام کے سامنے کھڑے نظر آرہے ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند