تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ترکی کا ایران کی سرحد پر 70 کلو میٹر دیوار کی تعمیر کا اعلان
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 19 صفر 1441هـ - 19 اکتوبر 2019م
آخری اشاعت: جمعہ 15 شعبان 1438هـ - 12 مئی 2017م KSA 06:39 - GMT 03:39
ترکی کا ایران کی سرحد پر 70 کلو میٹر دیوار کی تعمیر کا اعلان
ترک صدر رجب طیب ایردوآن۔
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

ترکی نے علاحدگی پسند کرد تنظیم ’کردستان ورکرز پارٹی‘ کی طرف سے ایران کی سرزمین سے حملوں کی روک تھام کے لیے ایران کی سرحد پر کنکریٹ کی دیوار تعمیر کرنے کا عزم ظاہر کیا ہے۔

امریکی اخبار ’نیویارک ٹائمز‘ کے مطابق ایران اور ترکی کی سرحد پر مجوزہ دیوار 70 کلو میٹر طویل ہوگی۔

انقرہ نے ایران کی سرحد پر دیوار کی تعمیر کا اعلان صدر ایردوآن کے دورہ امریکا کے بعد سامنے آیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ترک صدر کو امریکا کی جانب سے شمالی عراق میں کردستان ورکرز پارٹی کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی کلین چٹ ملنے اور واشنگٹن کو شمالی شام میں سرگرم کرد حمایۃ الشعب یونٹس کے جنگجوؤں کو اسلحہ کی فراہمی روکنے میں ناکامی کے بعد کیا ہے۔ ترکی امریکا پر زور دے رہا ہے کہ وہ شمالی شام میں سرگرم کرد جنگجوؤں کو بھاری اسلحہ فراہم نہ کرے۔

ترک صدر کے فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ ایرانی منافع سے زیادہ ترک مفادات کا دفاع کررہے ہیں۔

ایران کے خیال میں سرحد پر کنکریٹ کی دیوار کی تعمیر کے منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ تاہم مبصرین کا کہنا ہے کہ ایران شمالی عراق اور شام میں جاری آپریشنز میں ترکی پر دباؤ ڈالنےکے لیے کرد جنگجوؤں کو استعمال کررہا ہے۔

امریکی اخبار کے مطابق جب ترک صدر طیب ایردوآن امریکا کو شام میں کرد جنگجوؤں کو اسلحہ کی فراہمی روکنے پر قائل کرنےمیں ناکام رہے تو انہوں نے ایران کی سرحد کے ساتھ ساتھ دیوار کی تعمیر اور کرد گروپوں کے خلاف فوجی کارروائی تیز کرنے کا عزم ظاہرکیا ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند