تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2018

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
"آج کے بعد کوئی حوثی نہیں": یمنی طالبات باغیوں کے سامنے ڈٹ گئیں
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 10 ذیعقدہ 1439هـ - 23 جولائی 2018م
آخری اشاعت: بدھ 25 رجب 1439هـ - 11 اپریل 2018م KSA 11:16 - GMT 08:16
"آج کے بعد کوئی حوثی نہیں": یمنی طالبات باغیوں کے سامنے ڈٹ گئیں
یمن - اسلام سيف

یمن کے دارالحکومت صنعاء میں منگل کے روز ایک اسکول کی طالبات باغی حوثی ملیشیا کے سامنے ڈٹ گئیں۔ طالبات نے اجتماعی طور پر "آج کے بعد کوئی حوثی نہیں" کے نعرے لگائے۔ یہ حوثی ملیشیا کی جانب سے طاقت اور اسلحے کے زور پر قبضے میں لیے جانے والے علاقوں میں عوام کی طرف سے باغیوں کا کنٹرول مسترد کیے جانے کی واضح ترین ترین دلیل ہے۔

اس حوالے سے سوشل میڈیا پر گردش میں آنے والے ایک وڈیو کلپ میں صنعاء کے شمالی علاقے وادی احمد میں واقع المنار گرلز اسکول کی طالبات اسکول کے احاطے میں حوثی باغیوں کے خلاف اپنے جذبات کا اظہار کرتی ہوئی نظر آ رہی ہیں۔ اسکول کی پرنسپل نے صبح کی اسمبلی میں طالبات سے حوثیوں کا نعرہ لگانے کا مطالبہ کیا جس کے جواب میں اسکول کی طالبات بپھر گئیں اور انہوں نے "آج کے بعد کوئی حوثی نہیں" کے نعرے لگانے شروع کر دیے۔

عنی شاہدین کے مطابق طالبات نے اسکول انتظامیہ کی جانب سے اس تعلیمی مرکز کو فرقہ وارانہ چھاؤنی بنا دینے اور حوثیوں کے حق میں نعرے لگوانے کے خلاف مظاہرہ کیا۔

عینی شاہدین نے باور کرایا کہ اسکول کی طالبات پرنسپل کی جانب سے تعلیمی اور تربیتی اقدار کے خلاف کارروائیوں پر سراپا احتجاج بن گئیں۔ اس موقع پر پرنسپل نے مسلح حوثی غنڈوں کو طلب کر لیا جنہوں نے اسکول میں داخل ہو کر ہوائی فائرنگ کی اور طالبات کو منتشر کر دیا۔

حوثیوں کے زیر قبضہ علاقوں میں باغی ملیشیا کی جانب سے اپنے حق میں نعرے بازی کے لیے دہشت بٹھانے کے تمام تر ذرائع کے باوجود یمنی اور طالبات کی جانب سے کئی مرتبہ انکار کے مواقف سامنے آ چکے ہیں۔

نقطہ نظر

قارئین کی پسند