تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
افغان صدر نے طالبان سے مذاکرات کے لیے 12 ارکان پر مشتمل ٹیم مقرر کردی
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعہ 17 ربیع الاول 1441هـ - 15 نومبر 2019م
آخری اشاعت: بدھ 19 ربیع الاول 1440هـ - 28 نومبر 2018م KSA 16:16 - GMT 13:16
افغان صدر نے طالبان سے مذاکرات کے لیے 12 ارکان پر مشتمل ٹیم مقرر کردی
افغان صدر اشرف غنی جنیوا میں اقوام متحدہ کے زیر اہتمام ایک کانفرنس میں شریک ہیں۔
جنیوا ۔ ایجنسیاں

افغانستان کے صدر اشرف غنی نے طالبان سے امن مذاکرات اور ان کے نتیجے میں ایک امن سمجھوتے کو حتمی شکل دینے کے لیے بارہ ارکان پر مشتمل ایک ٹیم تشکیل دی ہے۔یہ ٹیم طالبان سمیت ایک جمہوری اور مشمولہ معاشرے کے قیام کے لیے کام کرے گی جس میں خواتین کے حقوق کا احترام کیا جائے گا۔

صدر اشرف غنی نے بدھ کے روز جنیوا میں اقوام متحدہ کے زیر اہتمام ایک کانفرنس میں تقریر کرتے ہوئے اس مذاکراتی کمیٹی کے قیام کا اعلان کیا ہے۔انھوں نے بتایا کہ ’’ملک بھر میں کئی ماہ تک شہریوں کے ساتھ طویل مشاورت کے بعد ہم نے امن مذاکرات کے لیے ایک نقشہ راہ وضع کیا ہے‘‘۔

انھوں نے کہا کہ ’’ ہم نے امن سمجھوتے کی جانب پیش رفت کے لیے درکار ادارہ اور میکانزم وضع کردیا ہے۔اب ہم امن عمل کے اگلے باب کی جانب بڑھ رہے ہیں‘‘۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند