تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
شہزادہ ولیم کا نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کی شکار مساجد کا دورہ، متاثرین سے ملاقات
انتہا پسندانہ نظریات کے خلاف کوششیں‌ جاری رکھنے کا عزم
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعہ 16 ذیعقدہ 1440هـ - 19 جولائی 2019م
آخری اشاعت: ہفتہ 21 شعبان 1440هـ - 27 اپریل 2019م KSA 08:35 - GMT 05:35
شہزادہ ولیم کا نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کی شکار مساجد کا دورہ، متاثرین سے ملاقات
انتہا پسندانہ نظریات کے خلاف کوششیں‌ جاری رکھنے کا عزم
ولنگٹن ۔ ایجنسیاں

ملکہ الیزابیتھ کے پوتے شہزادہ ولیم نے کل جمعہ کو نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کا شکار ہونے والی مساجد کا دورہ کیا اور دہشت گردانہ واقعے میں بچ جانے والے عینی شاہدین سے ملاقات کی۔

خبر رساں اداروں کے مطابق شہزادہ ولیم نے اس موقع پر دہشت گردی کی تمام شکلوں کی مذمت کی اور کہا کہ انتہا پسندانہ نظریات کی بیخ کنی کے لیے پوری عالمی برادری کو مل کر کوششیں جاری رکھنا ہوں گی۔

خیال رہے کہ 15 مارچ کو نیوزی لینڈ کے شہر کرائیسٹ چرچ میں ایک دہشت گرد نے دو مساجد میں نماز جمعہ کے موقع پر اندھا دھند فائرنگ کر کے 50 نمازی شہید اور 50 زخمی کر دیئے تھے۔

کل جمعہ کو شہزادہ ولیم ڈوک آف کیمبرج نے جنوبی نیوزی لینڈ میں کرائیسٹ چرچ شہر کی مسجد النور کا دورہ کیا۔ پندرہ مارچ کو دہشت گردانہ حملے میں سب سے زیادہ مسجد النور متاثر ہوئی تھی جس میں کم سے کم 43 نمازی شہید ہو گئے تھے۔

شہزادہ ولیم کے دورہ مسجد النور کے موقع پر نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا ارڈرن، مذہبی اور سماجی رہ نمائوں کی بڑی تعداد بھی ان کے ہمراہ تھی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے برطانوی شہزادے نے کہا کہ نیوزی لینڈ کی مساجد میں نمازیوں پر حملہ لا محدود انتہا پسندانہ نظریات کا شاخسانہ ہے اور دہشت گردی اور انتہا پسندی کی تمام شکلوں‌ سے نمٹنے کے لیے پوری دنیا کو متحد ہو کر کوششیں جاری رکھنا ہوں گی۔

خبر رساں اداروں کے مطابق شہزادہ ولیم کرائیسٹ چرچ آمد پر نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جینسڈا ارڈرن اور مسجد النور کے امام وجمال فودہ نے استقبال کیا۔ اس موقع پر سیکیورٹی کے فول پروف انتظامات کیے گئے تھے۔

مسجد النور کے دورے کے بعد دہشت گردی کا شکار ہونے والی دوسری مسجد لینووڈ کا بھی دورہ کیا اور دہشت گردی کے واقعے میں زخمی ہونے والے افراد سے ملاقات کی۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند