تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
بھارت: انجیر کا قدیم درخت مکان کے اندر سے کیسے باہر گیا؟
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعرات 19 محرم 1441هـ - 19 ستمبر 2019م
آخری اشاعت: بدھ 15 شوال 1440هـ - 19 جون 2019م KSA 07:41 - GMT 04:41
بھارت: انجیر کا قدیم درخت مکان کے اندر سے کیسے باہر گیا؟
العربیہ ڈاٹ نیٹ

بھارت میں ایک فطرت پرست خاندان نے اپنے مکان کے صحن میں موجود انجیر کےبرسوں پرانے درخت کو کاٹنے کے بجائے مکان کی توسیع کے دوران اسے برقرار رکھ کراس کے اطراف میں مکان کی تعمیر کرکے منفرد مثال قائم کی ہے۔ بھارتی خاندان نے درخت بچانے کے لیے مکان ایسے تعمیر کیا کہ درخت بھی بچ گیا اورمکان بھی کشادہ ہوگیا۔ بھارت میں یہ اپنی نوعیت کی پہلی مثال ہے جس میں مکان کی توسیع کے دوران ایک قدیم درخت کو بچالیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق بھارتی شہر گبل پورمیں‌ کیشاروانی خاندان نے مکان کی توسیع کے دروان صحن میں موجود 150 سال پرانا انجیر کا درخت کاٹنے کے بجائے درخت کے تنے کے ارد گرد تعمیرات کرکے اسے مکان کے وسط سے باہر نکال دیا۔

کیشاروانی خاندان کے مطابق یہ مکان برسوں‌پرانا ہے اور گھر کے کسی فرد نے بھی اسے کاٹنے کا مشورہ نہیں دیا۔ جوگیش کیشاروانی نے بتایا کہ سنہ 1994ء میں اس کے والد نے ایک انجینیر دوست کی معاونت سے مکان تعمیر کیا۔ اس وقت انجیر کا یہ درخت صحن میں تھا۔ حال ہی میں مکان کی مزید توسیع کی گئی تو ہم نے انجیر کے درخت کو باقی رکھا۔ ان کا کہنا تھا کہ انجیر کے اس درخت کی عمرڈیڑھ سو سال سےزیادہ ہے۔ ہم فطرت کو بہت پسند کرتے ہیں۔ اس لیے ہم نے درخت کاٹنے کےبجائے اسے باقی رکھا۔

خیال رہے کہ بھارت میں انجیر کے درخت کو پیپل بھی کہا جاتا ہے اور ہندئوں کے ہاں یہ درخت مقدس سمجھاجاتا ہے اور اسے کاٹنے کو بدشگونی پرمحمول قرار دیا جاتا ہے۔

یوگیش کیشاروانی پیشے کےاعتباد سےمقامی اسکول میں استاد ہیں اور انہوں‌نے چارمنزلہ مکان تعمیرکیا ہے۔ انجیر کے درخت کا تنا ہی نہیں‌بلکہ اس کی شاختی بھی کھڑکیوں‌سے باہر نکالی گئی ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند