تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
حفتر کی وفادار فوج کے خوف سے حکومت نوازملیشیا کا طرابلس سے انخلاء شروع
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 18 ربیع الثانی 1441هـ - 16 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: بدھ 14 ذیعقدہ 1440هـ - 17 جولائی 2019م KSA 12:42 - GMT 09:42
حفتر کی وفادار فوج کے خوف سے حکومت نوازملیشیا کا طرابلس سے انخلاء شروع
العربیہ ڈاٹ نیٹ ۔ منیہ غانمی

جنرل حفتر کی وفادار لیبی فوج کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ دارالحکومت طرابلس میں قومی وفاق حکومت کی حامی مصراتۃ ملیشیا نے فیصلہ کن لڑائی کے خوف سے پسپائی اختیار کرتے ہوئے مصراتۃ شہر کی طرف واپسی شروع کر دی ہے۔

العربیہ ڈا‌ٹ نیٹ‌ کے مطابق الکرامہ آپریشن کنٹرول روم کی طرف سے منگل کی شام جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ آنے والے دنوں میں قومی فوج طرابلس پر قبضے کا فیصلہ کن آپریشن شروع کرنے والی ہے۔ اس کارروائی کے خوف سے حکومت نواز مصراتۃ ملیشیا کے جنگجو طرابلس سے نکلنا شروع ہو گئے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مصراتۃ ملیشیا نے السوانی اسکیںڈری اسکول میں موجود اپنے اسلحہ کا گودام وہاں سے ختم کر دیا ہے اور ملیشیا کے جنگجو اسلحہ سمیت الکریمیہ کی طرف منتقل ہو رہے ہیں۔ یہ جنگجو مصراتۃ واپسی کے لیے محاذ جنگ سے پیچھے چلے گئے ہیں۔ لیبیا میں جنرل خلیفہ حفتر کی وفادار فوج اور عرب فوج کی طرف سے بڑے حملے کی تیاری کی اطلاعات کے بعد مصراتۃ ملیشیا کے دیگر جنگجو الرملہ کے مقام سے نکل گئے ہیں۔

خیال رہے کہ جنرل خلیفہ حفتر کی وفادار فوج نے 4 اپریل کو دارالحکومت طرابلس پر قبضے کے لیے فوج کشی کی تو مصراتۃ ملیشیا نے قومی وفاق حکومت کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے اپنے جنگجو طرابلس میں تعینات کر دیے تھے۔ مصراتۃ ملیشیا میں متعدد جنگجو گروپ شامل ہیں جن میں الحلبوص بریگیڈ، فورس سوم، ملیشیا 166، محمد بعیو کا شریحان بریگیڈ اور دیگر شامل ہیں جب کہ مجموعی طور پر اس ملیشیا کی قیادت عالمی اشتہاری دہشت گرد صلاح بادی کر رہا ہے۔

حفتر کی وفادار فوج کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ آنے والے چند گھنٹے طرابلس میں پیش قدمی کے حوالے سے اہمیت کے حامل ہیں۔

فوجی ترجمان کرنل احمد المسماری نے 'فیس بک' پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ماضی کے معرکوں سے سبق سیکھتے ہوئے فوج نے اہم دفاعی پوزیشنوں کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔ فوج جلد ہی دہشت گرد ملیشیائوں کے ٹھکانوں کی طرف فاتحانہ پیش قدمی کرے گی۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند