تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
شام میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال قابلِ درگزر نہیں : 7 ممالک کا مشترکہ بیان
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعہ 28 جمادی الاول 1441هـ - 24 جنوری 2020م
آخری اشاعت: جمعہ 27 محرم 1441هـ - 27 ستمبر 2019م KSA 12:25 - GMT 09:25
شام میں کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال قابلِ درگزر نہیں : 7 ممالک کا مشترکہ بیان
بشار الاسد
دبئی – الحدث نیوز چینل

امریکا اور سعودی عرب سمیت 7 ممالک کے وزراء خارجہ نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ ان کے ملک شام میں کیمیائی ہتھیار کے استعمال سے درگزر نہیں کریں گے۔ یہ موقف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے ضمن میں ہونے والے ایک بند کمرے کے اجلاس کے بعد جاری مشترکہ بیان میں سامنے آیا۔ دیگر پانچ وزراء خارجہ کا تعلق برطانیہ، فرانس، جرمنی، مصر اور اردن سے ہے۔

بیان میں اس بات پر شدید افسوس کا اظہار کیا گیا کہ سلامتی کونسل اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرنے اور شہریوں کے تحفظ میں ناکام رہی۔

ساتوں ممالک کے وزراء خارجہ نے باور کرایا کہ شام میں ایک سیاسی حل کی فوری ضرورت ہے۔ اسی طرح سلامتی کونسل کی قرار داد 2254 پر عمل درامد یقینی بنایا جائے جو کامیابی کے لیے ابھی تک سنجیدہ پاسداری کی متقاضی ہے۔

بیان میں شریک ساتوں ممالک نے اقوام متحدہ کی جانب سے شام کے لیے آئینی کمیٹی تشکیل دینے کے اعلان کا خیر مقدم کیا۔ ساتھ ہی مطالبہ کیا گیا کہ اس کمیٹی کی کارروائیوں کا جلد از جلد آغاز ممکن بنایا جائے۔ بیان میں اس بات پر بھی زور دیا گیا کہ شام میں ایک مستقل، جامع اور پر امن حل تک پہنچنے کی کوششوں کے سلسلے میں مجرموں سے پوچھ گچھ اور ان کا احتساب نہایت اہم ہے۔

دوسری جانب شام کے لیے امریکی ایلچی جیمز جیفری کا کہنا ہے کہ اس امر کی تصدیق ہو چکی ہے کہ بشار حکومت نے شام میں کلورین گیس کا استعمال کیا۔ العربیہ کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے مزید کہا کہ اس حوالے سے سزا دینے کے لیے کئی آپشن ہیں جن میں عسکری، سفارتی یا پھر اقتصادی پابندیاں شامل ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند