تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ایرانی کمپنی نے آئل ٹینکر پر سعودی عرب سے حملے کا دعویٰ جھوٹ قرار دے دیا
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

اتوار 19 ربیع الاول 1441هـ - 17 نومبر 2019م
آخری اشاعت: ہفتہ 12 صفر 1441هـ - 12 اکتوبر 2019م KSA 07:12 - GMT 04:12
ایرانی کمپنی نے آئل ٹینکر پر سعودی عرب سے حملے کا دعویٰ جھوٹ قرار دے دیا
العربیہ ڈاٹ نیٹ

نیشنل ایرانی آئل کمپنی (این آئی او سی) نے سعودی جانب سے میزائل کے ذریعہ اپنے ٹینکر کو نشانہ بنانے کے بارے میں ایرانی وزارت خارجہ کے دعوے کو جھوٹ قرار دیا ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ "ایرانی ٹینکر کو سعودی سرزمین سے میزائل سے نشانہ بنانے کی خبر کی کوئی صداقت نہیں ہے۔

خیال رہے کہ 'پریس ٹی وی' کی طرف سے جاری کردہ ایک ویڈیو فوٹیج دکھایا گیا ہے کہ ایرانی تیل بردار جہاز میں بحیرہ احمر میں دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں جہاز کو نقصان پہنچا ہے۔

ایرانی نیوز ایجنسی 'ارنا' نے بتایا کہ نیشنل آئل کمپنی کے باخبر ذرائع کے حوالے سے ذرائع ابلاغ میں آنے والی ان خبروں کی تردید کی ہے کہ جن میں دعوی کیا گیا ہے کہ بحیرہ احمر میں سبیٹی آئل ٹینکر کو سعودی عرب سے نشانہ بنایا گیا۔

ایجنسی نے مزید کہا کہ اس واقعے سے متعلق تازہ ترین پیشرفت سے ظاہر ہوتا ہے کہ دھماکے کے بعد جہاز سے تیل بہنا شروع ہوگیا تھا تاہم ایک دوسرے ذرائع نے تیل کے اخراج کی تردید کی ہے اور کہا کہ جہاز سلامت ہے۔

ارنا نیوز ایجنسی کی ویب سائٹ پر 'سبیٹی' جہاز کے ایک پرانے حادثے کی تصاویر پوسٹ کی تھیں اور ساتھ ہی دعویٰ کیا گیا تھا کہ ایرانی تیل بردار جہاز پر جدہ سے 60 کلو میٹر کی مسافت پر گذرتے ہوئے میزائل سے نشانہ بنایا گیا۔ حملے میں جہاز کی دونوں ٹینکیوں کو نقصان پہنچا اور تیل بہنا شروع ہوگیا۔

ایران کی ایک دوسری نیوز ایجنسی'ایسنا' کے مطابق دھماکہ آئل ٹینکر کے اندر ہوا ہے۔ جہاز پر کسی قسم کا دھواں اٹھتا یا تیل کے بہائو کا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔ بلکہ اس کے برعکس جہاز مکمل طور پر محفوظ ہے۔

ناسا کے ذریعہ لی گئی تصاویر سمیت جمع کی گئی تمام معلومات کی بنا پر کوئی دھواں، آگ، تیل کا پھیلنا، یا یہاں تک کہ کوئی امدادی کام نہیں دیکھا گیا۔اس کے برعکس، ایرانی ٹینکر معمول کی رفتار سے سفر کررہا تھا۔

ایرانی خبر رساں ادارے "آئی ایس این اے" نے اطلاع دی ہے کہ ایرانی آئل ٹینکر "سبٹیٹی" کے دھماکوں کی جمعہ کی صبح سامنے آئی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ اس جہاز کے دو حصوں میں دو دھماکے ہوئے تھے۔

ایک نامعلوم ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا کہ ٹینکر میں ایک دھماکا ہوا۔ نیشنل ایرانی آئل کمپنی کی ملکیت والے ٹینکر میں دھماکے کے نتیجے میں جہاز میں آگ لگ گئی۔ تاہم ایرانی خبر رساں ایجنسی نے بعد میں کہا کہ بحیرہ احمر میں ٹینکر "سبیٹی" پر دھماکے کے نتیجے میں آگ نہیں لگی۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند