تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
فرانس : بچّی کو دو برس تک گاڑی کی ڈگی میں محبوس رکھنے والی ماں کا انجام
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

اتوار 19 ربیع الاول 1441هـ - 17 نومبر 2019م
آخری اشاعت: جمعہ 18 صفر 1441هـ - 18 اکتوبر 2019م KSA 08:48 - GMT 05:48
فرانس : بچّی کو دو برس تک گاڑی کی ڈگی میں محبوس رکھنے والی ماں کا انجام
روزا دا کروز
ليموج – ایجنسیاں

فرانس میں عدالت نے ایک خاتون کو پانچ سال جیل کی سزا سنائی ہے۔ اس خاتون نے اپنی بچی کو 23 ماہ تک گاڑی کی ڈکّی میں محبوس رکھا تھا جس کے نتیجے میں وہ بچی دائمی معذوری کا شکار ہو گئی۔

اس کہانی کا انکشاف اکتوبر 2013 میں اس وقت ہوا تھا جب فرانس کے جنوب مغربی شہر ٹیرسن میں گاڑیوں کے ایک ورکشاپ کے ذمے دار نے گیرج کی ایک خاتون گاہک کی گاڑی کی ڈگی میں باؤنسر کے اندر ایک بچی سیرینا کو لیٹا ہوا پایا۔ یہ گاڑی بچی کی ماں روزا دا کروز کی تھی۔

گیرج کے ذمے دار کو انکشاف ہوا کہ یہ بچی سوکھے پن کی بیماری میں مبتلا ہونے کے علاوہ آکسیجن کی کمی کے خطرے سے بھی دوچار تھی۔

بچی کی ماں روزا کے خلاف 6 سال تک مقدمے کی کارروائی جاری رہی جس کے بعد جمعرات کے روز عدالت نے اسے 5 سال کی جیل کی سزا سنائی اور اس کا نفسیاتی علاج بھی لازم قرار دیا۔ علاوہ ازیں عدالت نے 51 سالہ روزا کو اس کی بیٹی سیرینا کی سرپرستی سے سبک دوش کر دیا، روزا کے تین اور بچے بھی ہیں۔

اگرچہ سیرینا کی عمر 8 برس ہو چکی ہے تاہم اس کی دماغی نشو نما محض دو سے تین سال کی عمر کے بچے کے برابر ہے۔

 

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند