تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سوڈانی وزیراعظم حمدوک غیرضروری پروٹوکول سے کیسے بچتے ہیں؟
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعرات 14 ربیع الثانی 1441هـ - 12 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: جمعرات 16 ربیع الاول 1441هـ - 14 نومبر 2019م KSA 07:15 - GMT 04:15
سوڈانی وزیراعظم حمدوک غیرضروری پروٹوکول سے کیسے بچتے ہیں؟
العربیہ ڈاٹ نیٹ ۔ عبدالعزیز ابراہیم

سوڈان کے عبوری وزیراعظم عبداللہ حمدوک کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ غیرضروری پروٹوکول سے بچتے ہیں اور ان کی یہی خوبی عوام میں ان کی ایک بڑی پذیرائی کا بھی باعث ہے۔

پروٹوکول اور دوسروں کی غیرضروری معاونت سے بچنے کا تازہ واقعہ حمدوک کے دورہ برسلز کے موقع پر بھی دیکھاگیا جب وہ یورپی یونین کی دعوت پر برسلز پہنچے۔ وہ ہوائی اڈے سے کار پر یورپی یونین کے صدر دفتر کے باہر پہنچے تو بارش ہو رہی تھی۔ اس دوران ان کے ایک ذاتی محافظ نے چھتری کھول کران پر تان لی مگر حمدوک نے محافظ کو چھتری کھولنے سے روک دیا اور اسی طرح بارش میں چل کر وہ دفتر پہنچے۔

اس واقعے کی ایک فوٹیج سوشل میڈیا پروائرل ہوئی جس میں عبداللہ حمدوک کو اپنے محافظ کو یہ کہتے سنا جاسکتا ہے کہ'اس کی ضرورت نہیں'۔ اس کے بعد اس نے چھتری بند کردی۔

حمدوک کو اقتدار پر فائز ہوئے ابھی کچھ ہی ماہ گذرے ہیں مگر وہ پروٹوکول اختیار نہ کرنے پرعوام میں زیادہ مقبول ہیں۔۔

عبداللہ حمدوک کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ اگرچہ عالمی برادری کے ساتھ ان کی حکومت کے تعلقات کا ہنی مون ختم ہوگیا ہے مگر انہوں نے معاشی میدان میں کچھ بہتری کے اقدامات کیے ہیں۔ خالی خزانے اور قومی کرنسی کی قدر میں مسلسل کمی نے انہیں کافی پریشان کیے رکھا ہے۔ تاہم خوراک اورایندھن کےبحرانوں کے حل میں قابل ذکر پیش رفت نہیں ہوسکی۔

وزیر خارجہ امور شہزادہ فیصل بن فرحان بن عبد اللہ نے بدھ کے روز ریاض میں وزارت کے دفتر میں اپنے دفتر میں برطانیہ میں روسی سفیر سرگئی کوزولوف کا استقبال کیا۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند