تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
کویتی پارلیمان میں خاتون وزیر سے پوچھ تاچھ پر وزیراعظم کابینہ سمیت مستعفی
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

اتوار 10 ربیع الثانی 1441هـ - 8 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: جمعرات 16 ربیع الاول 1441هـ - 14 نومبر 2019م KSA 15:11 - GMT 12:11
کویتی پارلیمان میں خاتون وزیر سے پوچھ تاچھ پر وزیراعظم کابینہ سمیت مستعفی
کویتی وزیراعظم نے اپنی کابینہ کا استعفا امیر شیخ جابر الاحمد الصباح کو پیش کردیاہے۔
کویت ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

کویت کی کابینہ نے امیر شیخ جابرالاحمد الصباح کو اپنا استعفا پیش کردیا ہے۔اس نے یہ فیصلہ تعمیرات اور ورکس کی وزیر جینان رمضان سے پارلیمان میں پوچھ تاچھ کے بعد کیا ہے۔اس خاتون وزیر نے پارلیمان میں اپنے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پر اپنا عہدہ چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔

کویت کی سرکاری خبررساں ایجنسی کونا( کے یو این اے) نے اطلاع دی ہے کہ وزیراعظم شیخ جابر المبارک الصباح نے جمعرات کے روز باضابطہ طور پرامیر شیخ صباح الاحمد الصباح کو اپنی کابینہ کا استعفا پیش کردیا ہے لیکن اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی۔

پارلیمان کے بعض ارکان نے خاتون وزیر جینان رمضان پر الزام عاید کیا تھا کہ وہ 2018ءمیں سیلاب کی تباہ کاریوں سے ٹوٹ پھوٹ کا شکارہونے والے شہری ڈھانچے اور سڑکوں کی مرمت کرانے میں ناکام رہی ہیں۔

مقامی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق دس ارکان نے پارلیمان میں ان کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کردی تھی۔

تاہم جینان رمضان نے اپنے خلاف اس تحریک کے بعد یہ دعویٰ کیا تھا کہ ان کی وزارت ماضی سے ہی مسائل کا شکار ہے اور انھیں ان مسائل کا ذمے دار نہ ٹھہرایا جائے جو ان کے قلم دان سنبھالنے سے پہلے کے وزارت میں موجود ہیں۔

واضح رہے کہ ماضی میں بھی کویت میں اسی انداز میں حکومتیں پارلیمان کے منتخب ارکان کے محکموں کی کارکردگی کے بارے میں سوالات پر مستعفی ہوتی رہی ہیں۔اگر کسی وزیر یا عہدہ دار کے خلاف پارلیمان میں عدم اعتماد کی تحریک پیش کردی جائے تو پھر پوری کابینہ ہی مستعفی ہو جاتی ہے۔

کویت میں آیندہ پارلیمانی انتخابات 2020ء کے اوائل میں متوقع ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند