تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
سعودی آرامکو کی قدر 20کھرب ڈالر سے متجاوز،تداول میں حصص کی قیمت میں تیزی
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

منگل 21 ذوالحجہ 1441هـ - 11 اگست 2020م
آخری اشاعت: جمعرات 14 ربیع الثانی 1441هـ - 12 دسمبر 2019م KSA 18:16 - GMT 15:16
سعودی آرامکو کی قدر 20کھرب ڈالر سے متجاوز،تداول میں حصص کی قیمت میں تیزی
سعودی آرامکو اوراسٹاک مارکیٹ کے حکام کمپنی کے حصص کی آئی پی او کے موقع تقریب میں شریک ہیں۔
العربیہ ڈاٹ نیٹ

دنیا میں سب سے زیادہ منافع کمانے والی سعودی عرب کی بڑی تیل کمپنی آرامکو کے حصص کی قدر میں جمعرات کو نمایاں اضافہ ہوا ہے۔سعودی اسٹاک مارکیٹ (تداول) میں کاروبار کے دوسرے روز اس کے ایک حصص کی قیمت بڑھ کر 38۰7 ریال (10۰32ڈالر) ہوگئی ہے۔اس کے اثاثوں کی قدربھی بڑھ کر بیس کھرب چھے ارب ڈالر(2006 ارب ڈالر) بھی ہوگئی۔

بدھ کو پہلے روز سعودی آرامکو نے 35۰2 ریال (9۰39 ڈالر) فی حصص میں کاروبار کیا تھا اور اس کے حصص کی قدر دس فی صد کی حد سے بڑھ گئی ہے۔اس طرح اس کی مجموعی قدر کا اندازہ 10 کھرب 880 ارب ڈالر(1880 ارب ڈالر) لگایا گیا تھا۔سعودی آرامکو دنیا میں مالیاتی قدر کے اعتبار سے سب سے بڑی کمپنی بن گئی ہے۔وہ ایپل اور توانائی کی پانچ بڑی کمپنیوں سے بھی آگے ہے۔

سعودی آرامکو نے اپنے حصص کی پہلی مرتبہ فروخت (آئی پی او)کے وقت ایک حصص کی تخمینی قیمت 30 سے 32 ریال کے درمیان مقرر کی تھی۔اس طرح اس نے حصص کی فروخت سے 25 ارب 60 کروڑ ڈالر حاصل کیے ہیں اور تاریخ میں پہلی مرتبہ حصص کی فروخت سے سب سے زیادہ رقم حاصل کرنے والی کمپنی بن گئی ہے۔

سعودی آرامکو کی نئی قدر کے بعد حکام کا مقرر کردہ دو ہزار ارب ڈالر کا ہدف بھی پورا ہوگیا ہے۔آرامکو کی پہلے قدر 1700 ارب ڈالر مقرر کی گئی تھی لیکن نئی قدر سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے 2016ء میں آرامکو کے حصص کی پیش کش کے اعلان کے وقت مقررہ کردہ ہدف کے عین مطابق ہے۔انھوں نے تب کہا تھا کہ کمپنی کی کل قدر بیس کھرب ڈالر ہوگی۔

اسٹاک مارکیٹ میں سعودی آرامکو کی قدر 20 کھرب ڈالر سے کم مقرر کی گئی تھی لیکن اس نے یہ عندیہ دیا تھا کہ اوپن مارکیٹ میں اس میں اضافہ کیا جائے گا۔

ایک سینیر بنک کار کے بہ قول اگر سعودی آرامکو اپنے 15 فی صد حصص کی فروخت کا انتخاب کرتی تو وہ آئی پی او سے 29 ارب 40 کروڑ ڈالر اکٹھے کرسکتی تھی۔ نیشنل کمرشل بنک کے شعبہ سرمایہ کاری بنک کاری کے سربراہ وسیم الخطیب کی رائے میں اگر گرین شو آپشن کا نفاذ کیا جاتا ہے تو سعودی آرامکو کے مزید حصص فروخت کیے جاسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ سعودی آرامکو دنیا کی سب سے منافع بخش کمپنی ہے۔اس کی خام تیل نکالنے کی لاگت بہت کم ہے اور ایک بیرل تیل نکالنے میں صرف تین ڈالر صرف ہوتے ہیں جبکہ یہ دنیا میں تیل کے سب سے زیادہ ذخائر کی بھی حامل ہے۔اس کی قریب ترین حریف ایگزن موبائل ہے مگر آرامکو کے تیل کے ذخائر اس سے چارگنا زیادہ ہیں۔

کمپنی 2020ء میں 75 ارب ڈالر حصص داران میں تقسیم کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ واضح رہے کہ سعودی آرامکو نے 2019ء کے پہلے نو ماہ میں 68 ارب ڈالر منافع حاصل کرنے کی اطلاع دی تھی۔اس طرح یہ دنیا میں سب سے منافع بخش کمپنی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند