تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
افغانستان :اشرف غنی واضح اکثریت سے دوبارہ صدر منتخب
چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ انتخابی نتائج کو تسلیم کرنے سے انکاری، چیلنج کرنے کا اعلان
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

بدھ 2 رجب 1441هـ - 26 فروری 2020م
آخری اشاعت: اتوار 24 ربیع الثانی 1441هـ - 22 دسمبر 2019م KSA 15:57 - GMT 12:57
افغانستان :اشرف غنی واضح اکثریت سے دوبارہ صدر منتخب
چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ انتخابی نتائج کو تسلیم کرنے سے انکاری، چیلنج کرنے کا اعلان
افغان صدر اشرف غنی ۔ فائل تصویر
کابل ۔ ایجنسیاں

افغانستان کے صدر اشرف غنی واضح اکثریت سے دوبارہ صدر منتخب ہوگئے ہیں جبکہ ان کے حریف چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ نے انتخابی نتائج کو چیلنج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

افغانستان میں صدارتی انتخابات کے لیے 28 ستمبر کو ووٹ ڈالے گئے تھے۔ افغانستان کے آزاد الیکشن کمیشن نے اتوار کو صدارتی انتخابات کے ابتدائی ،غیر حتمی نتائج کا اعلان کیا ہے۔ ان کے مطابق صدر اشرف غنی نے 50۰64 فی صد ووٹ حاصل کیے ہیں۔ان کے قریب ترین حریف عبداللہ عبداللہ 39۰52 فی صد ووٹ حاصل کرسکے ہیں۔

صدارتی امیدوار اب انتخابات کے حتمی نتائج کے اعلان سے قبل اپنی عذر داریاں دائر کر سکتے ہیں۔غیر حتمی نتائج کا اعلان ہوتے ہی عبداللہ عبداللہ کے دفتر نے ایک بیان میں کہاہے کہ وہ ان انتخابی نتائج کو چیلنج کریں گے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ جب تک ان کے جائز مطالبات کو تسلیم نہیں کیا جاتا، اس وقت تک انتخابی نتائج کو تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

صدارتی انتخابات کے نتائج کا اعلان 19 اکتوبر کو کیا جانا تھا لیکن ان میں بعض ٹیکنیکل امور اور امیدواروں بالخصوص عبداللہ عبداللہ کی جانب سے فراڈ کے الزامات کی وجہ سے ان کے اعلان میں بار بار تاخیر ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ ان صدارتی انتخابات میں ووٹ ڈالنے کا تناسب بہت کم رہا تھاجبکہ جرمنی کی مہیا کردہ ووٹنگ مشینوں کے پولنگ کے روز بروقت فعال نہ ہونے اور نقائص کی وجہ سے لاکھوں افغان اپنا حق رائے دہی استعمال نہیں کرسکے تھے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند