تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ایران دہشت گردی کا سب سے بڑا پشتی بان ہے:عادل الجبیر
’’ہم کوئی بنانا ری پبلک نہیں، سعودی عدلیہ پرتنقید بلا جواز ہے‘‘
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

بدھ 24 جمادی الثانی 1441هـ - 19 فروری 2020م
آخری اشاعت: بدھ 26 جمادی الاول 1441هـ - 22 جنوری 2020م KSA 07:05 - GMT 04:05
ایران دہشت گردی کا سب سے بڑا پشتی بان ہے:عادل الجبیر
’’ہم کوئی بنانا ری پبلک نہیں، سعودی عدلیہ پرتنقید بلا جواز ہے‘‘
عادل الجبیر
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے منگل کے روز یورپی پارلیمنٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے اجلاس سے خطاب میں کہا کہ سعودی عرب ایک خود مختار ریاست ہے اور ہم کسی کو مملکت کا گھیرائو کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ انہوں نے یورپی رہ نمائوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مملکت کے بارے میں ان کی معلومات افواہوں پر مبنی ہیں۔

الجبیر نے کہا کہ ہماری عدلیہ پرتنقید کا سلسلہ بند کیا جائے۔ سعودی عرب کوئی 'بنانا اسٹیٹ' نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ خطے کے اقتصادی اور عسکری شعبوں میں یورپی ممالک کا کلیدی کردار ہے۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب دہشت گردی کے خلاف جنگ جاری رکھے گا۔ سعودی عرب ایک عرصے سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف جنگ جاری رکھے ہوئے ہے۔

ایران دہشت گردی کا سب سے بڑا پشت پناہ

یورپی پارلیمنٹ سے خطاب میں سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور نے کہا کہ ایران پوری دنیا میں دہشت گردی کا سب سے بڑا پشت پناہ ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عراق، لبنان اور ایران کے اہل تشیع بھی تہران رجیم کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔

سعودی وزیر نے کہا کہ قطر کے ساتھ جاری تنازع کے خاتمے کے لیے دوحا کو دہشت گردی کی معاونت ختم کرنا ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب نے یمن میں تعمیر وترقی کے لیے 14 ارب ڈالر کی رقم فراہم کی۔ جب کہ یمن کے حوثی باغیوں کی طرف سے سعودی عرب پر 300 میزائل اور 100 ڈرون حملے کیے۔ حوثی ملیشیا یمنی عوام کے خلاف جنگی جرائم کی مرتکب ہو رہی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند