تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
احتیاطی تدابیر سے پہلوتہی،سعودی عرب میں کرونا وائرس کے کیس بڑھ سکتے ہیں: وزیرصحت
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

بدھ 9 ربیع الثانی 1442هـ - 25 نومبر 2020م
آخری اشاعت: پیر 2 ربیع الاول 1442هـ - 19 اکتوبر 2020م KSA 18:21 - GMT 15:21
احتیاطی تدابیر سے پہلوتہی،سعودی عرب میں کرونا وائرس کے کیس بڑھ سکتے ہیں: وزیرصحت
العربیہ ڈاٹ نیٹ

سعودی عرب میں حالیہ ہفتوں کے دوران میں کرونا وائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے مگر اس کے باوجود سعودی وزیر صحت ڈاکٹر توفیق الربیعہ نے خبردار کیا ہے کہ اگراس مہلک وَبا سے نمٹنے کے لیے احتیاطی تدابیر کونظرانداز کیا گیا تو ایک مرتبہ پھر مملکت میں کووِڈ-19 کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔

انھوں نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ اس وقت متعدد ممالک میں کووِڈ-19 کی وَبا کی دوسری لہر چل رہی ہے اور اس کا بنیادی سبب لوگوں کا پیشگی احتیاطی تدابیر کی پاسداری نہ کرنا اور چہروں پر ماسک نہ پہننا ہے۔

گذشتہ جمعرات سے سعودی عرب میں کرونا وائرس کے روزانہ 400 سے کم کیس رپورٹ ہورہے ہیں۔اب تک سعودی عرب میں کرونا وائرس کے کل تصدیق شدہ کیسوں کی تعداد 342582 ہوچکی ہے۔

وزیر صحت توفیق الربیعہ نے اپنے بیان میں مزید کہا ہے کہ جونہی کرونا وائرس کے علاج کی کوئی محفوظ اور مؤثر ویکسین دستیاب ہوتی ہے تو اس کو سعودی عرب میں استعمال کے لیے حاصل کیا جائے گا۔

انھوں نے عوام پر زوردیا ہے کہ ان میں سے چند ایک کے افعال سے مملکت کے سیکڑوں افراد متاثر ہوسکتے ہیں۔انھوں نے ٹویٹر پرلکھا ہے:’’ہم ہرکسی سے تعاون کی درخواست کرتے ہیں کہ تحفظِ صحت کے لیے احتیاطی تدابیر کی پاسداری کی جائے۔ہم سب ایک ہی کشتی کے سوار ہیں اور بعض کی ناکامی سے ہر کوئی متاثر ہوگا۔‘‘

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند