تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2020

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
شامی عورت باپ کے سامنے زنا کے جُرم میں سنگسار
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

بدھ 17 ذیعقدہ 1441هـ - 8 جولائی 2020م
آخری اشاعت: بدھ 27 ذوالحجہ 1435هـ - 22 اکتوبر 2014م KSA 23:57 - GMT 20:57
شامی عورت باپ کے سامنے زنا کے جُرم میں سنگسار
شامی باپ اپنی بیٹی کو باندھ کر سنگسار کرنے کے لیے داعش کے سامنے لایا ہے۔
العربیہ ڈاٹ نیٹ

شام کے شہر حماہ میں دولت اسلامیہ (داعش) کے سکیورٹی اہلکاروں نے ایک عورت کو اس کے باپ کے سامنے غیر مرد کے ساتھ ناجائز جنسی تعلقات کے جُرم میں سنگسار کردیا ہے۔

داعش نے اس عورت کو سنگسار کرنے کی ویڈیو بھی جاری کی ہے اور یہ ویڈیو برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کو منگل کے روز ملی ہے۔اس ویڈیو میں عورت اپنے باپ سے معافی کی التجا کررہی ہے لیکن باپ اس کو رسی سے باندھ کر سنگسار کرنے کے لیے داعش کے جنگجوؤں کے سامنے لارہا ہے۔

ویڈیو میں داعش کے دو جنگجو اس عورت کے باپ کے قریب آتے ہیں اور اس کو کَہ رہے ہیں کہ وہ اپنی بیٹی کو معاف کردے کیونکہ وہ ابھی زندگی سے کنارہ کش ہونے اور اللہ سے ملنے والی ہے۔وہ عورت بار بار معاف کرنے کی التجا کررہی ہے۔

ویڈیو میں داعش کا ایک جنگجو عورت کے سامنے یہ وضاحت کرتا ہے کہ اس کو کیوں یہ سنگین سزا دی جارہی ہے۔اس کا عورت کو مخاطب ہوکر کہنا تھا کہ''اس کو زنا جیسے جرم میں ملوث نہیں ہونا چاہیے تھا اور دوسری عورتوں کے لیے ایک مثال بننا چاہیے تھا''۔

''آپ کو یہ سزا آپ کی غلط حرکت کی وجہ سے دی جارہی ہے۔آپ کو کسی نے اس غلط کام کے لیے مجبور نہیں کیا تھا۔اس لیے اب آپ کو اللہ کا حکم ماننا ہوگا اور اللہ کے سامنے سرِتسلیم خم کرنا ہوگا۔اسلام اللہ کے سامنے جھکنے کا نام ہے''۔اس جنگجو کا مزید کہنا تھا۔

پھر وہ اس سے پوچھتا کہ ''کیا آپ کو اللہ کا فیصلہ منظور ہے''۔اس کے جواب میں وہ عورت بے دلی سے ہاں کَہ رہی ہے۔اس کے بعد اس کا والد اس کو ایک رسی سے باندھ دیتا ہے اور اس کو ایک گڑھے کے پاس لے جاتا ہے جہاں اس پر پتھر برسائے جاتے ہیں اور اس طرح اس کو موت سے ہم کنار کردیا جاتا ہے۔

داعش کے جنگجو عراق اور شام میں اپنے زیرنگیں علاقوں میں سنگین جرائم کے مرتکبین اور حدود اللہ پامال کرنے والوں کو اسی طرح کی سخت سزائیں دیتے ہیں اور پھر ان کی ویڈیو بنا کر انٹرنیٹ پر جاری کردیتے ہیں۔ان ویڈیوز میں بالعموم داعش کے نقاب پوش جنگجو نمودار ہوتے ہیں لیکن مذکورہ ویڈیو میں داعش کے کھلے چہروں والے باریش ارکان بھی نظر آرہے ہیں۔

داعش نے جولائی میں اپنے مضبوط مرکز شام کے صوبے الرقہ میں بھی دو عورتوں کو زنا کے جرم میں سنگسار کردیا تھا۔اس سے پہلے عراق کے شمالی شہر موصل میں ایک شخص کو اسی جرم میں قصوروار قرار دے کر سنگسار کیا گیا تھا اور ایک شخص کے چوری کے جرم میں ہاتھ کاٹ دیے گئے تھے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند