تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2018

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
یہودیوں کے ہاتھوں القدس کی مٹتی ثقافت کے احیاء کی مہم
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

منگل 2 ربیع الثانی 1440هـ - 11 دسمبر 2018م
آخری اشاعت: اتوار 5 شعبان 1436هـ - 24 مئی 2015م KSA 07:51 - GMT 04:51
یہودیوں کے ہاتھوں القدس کی مٹتی ثقافت کے احیاء کی مہم
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

فلسطین کے تاریخی شہر مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی حکومت اور منظم صہیونی جتھوں کے ہاتھوں 'یہودیانے' کی خطرناک سازشوں کا طویل عرصے سے سامنا ہے لیکن مقامی فلسطینی آبادی کم وسائل کے باوجود صہیونیوں کی مسلط کردہ تہذیبی اور ثقافتی جنگ کا پورے عزم کے ساتھ مقابلہ کرتے دکھائی دیتے ہیں۔

العربیہ ٹی وی کے مطابق بیت المقدس کی اسلامی تاریخ اور تہذیب وثقافت کے دفاع اور شہر مقدس کو "یہودیانے" کی پالیسیوں کے خلاف ایک نئی مہم شروع کی ہے۔ "القدس میں زندگی" کے عنوان سے جاری اس منفرد مہم میں یہودی ریشہ دوانیوں کے ہاتھوں آخری سانسیں لیتی مقامی فلسطینی صنعت کو بچانے اور دستکاری کو ترویج دینے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

عرب دنیا اور فلسطین سے الگ کردیے جانے والے بیت المقدس شہر کے باشندے صدیوں سے دستکاری کے ہنر میں طاق سمجھے جاتے رہے ہیں۔ بیت المقدس میں ماہر دستکاروں کے ہاتھوں سے بنی اشیاء آج بھی دنیا بھر میں پسند کی جاتی ہیں۔

بیت المقدس کے یہ ہنرمند اب بے بس بھی دکھائی دیتے ہیں کیونکہ انہیں صہیونیوں کی تہذیبی اور عبرانی یہودی ثقافتی یلغار کا سامنا تو ہے ہی مگر شہر کو بچانے کے لیے عرب دنیا، مسلم امہ اور فلسطینی انتظامیہ کی جانب سے بھی خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے جا رہے ہیں۔ ایسے میں اگربیت المقدس میں مقامی ثقافت کے احیاء کی جتنی بھی کوشش کی جائے وہ صہیونیوں کے ظالمانہ ہتھکنڈوں کی نذرہوجاتی ہے۔ مقامی فلسطینی شہریوں کی شہرکا تاریخی تشخص بچانے کے لیے جاری مساعی قابل تحسین اورعرب اور مسلم دنیا کے لیے لمحہ فکریہ بھی ہیں۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند