تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
القنیطرہ میں متعدد اہداف پراسرائیلی بمباری: شامی رجیم کا دعویٰ
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 18 ربیع الثانی 1441هـ - 16 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: منگل 6 جمادی الثانی 1440هـ - 12 فروری 2019م KSA 07:43 - GMT 04:43
القنیطرہ میں متعدد اہداف پراسرائیلی بمباری: شامی رجیم کا دعویٰ
دمشق ۔ ایجنیساں

شام کے سرکاری ذرائع ابلاغ نے دعویٰ کیا ہے کہ اسرائیلی جنگی طیاروں نے ملک کے جنوبی علاقے القنیطرہ میں متعدد اہداف پر بمباری کی ہے تاہم اس بمباری کے نتیجے میں کسی قسم کے جانی نقصان کی تصدیق نہیں ہوسکی۔

شامی خبر رساں ادارے'سانا' کے مطابق اسرائیل نے ٹینکوں سے القنیطرہ میں تباہ شدہ اسپتال پر گولے داغے۔ اس کے علاوہ جباثا الخشب ، تل الدرعیہ اور دیگر مقامات پر بھی ٹینکوں سے گولہ باری کے ساتھ جنگی طیاروں سے بھی بمباری کی گئی۔ اس بمباری کے نتیجے میں املاک کو نقصان پہنچا ہے تاہم کسی قسم کے جانی نقصان کی تصدیق نہیں ہوئی۔

'سانا' کی طرف سے جاری کردہ تفصیلات میں‌بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے سوموار کی شام مقامی وقت کے مطابق ساڑھے پانچ بجے جباتا الخشب میں تل الضھور کے مقام پر گولہ باری کی۔ اس کے بعد تل ادرعیا، تل خالد میں بھی گولہ باری کی گئی۔ بعد ازاں 6:50 پر القنیطرہ کے اسپتال پر ڈرون طیارے کی مدد سے چار میزائل دغے گئے۔ان میں ایک میزائل شامی فوج کے ایک اڈے کے قریب گرا ہے تاہم ان حملوں میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ البتہ غیرمعمولی مادی نقصان پہنچا ہے۔

'سانا' نے عسکری ذریعے کے حوالے سے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے وادی گولان کی سرحد کے قریب متعدد دیہات پر بھی گولہ باری کی۔

سرحدی علاقے درایہ میں متعدد حملے کئے گئے۔ شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پ نظر رکھنے والے ادارے 'آبزر ویٹری' کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے القنیطرہ میں شامی فوج کی متعدد تنصیبات جن میں ایک رصدگاہ بھی شامل پر گولہ باری کی جس کےنتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ انہوں‌نے حملے کا ہدف بننے والی تنصیبات کی تفصیلات نہیں بتائیں۔

ادھر اسرائیلی فوج کی ترجمان نے شام میں القنطیرہ کے مقام پر گولہ باری اور بمباری کے شامی دعوے پر کسی قسم کا تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند