تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
ادلب میں تین روز میں اسد رجیم کے 20 فوجی ہلاک
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 22 ذوالحجہ 1440هـ - 24 اگست 2019م
آخری اشاعت: بدھ 21 جمادی الثانی 1440هـ - 27 فروری 2019م KSA 08:22 - GMT 05:22
ادلب میں تین روز میں اسد رجیم کے 20 فوجی ہلاک
بیروت ۔ ایجنسیاں

شام کے جنگ زدہ علاقے ادلب میں گذشتہ تین روز میں مسلح جنگجوئوں اور اسد رجیم کی فوج کےدرمیان ہونے والے تصادم کے نتیجےمیں کم سے کم 20 سرکاری فوجی ہلاک اور کئی زخمی ہوگئے۔

شام میں انسانی حقوق کی صورت حال پرنظر رکھنے والے ادارے 'سیرین آبزر ویٹری برائے انسانی حقوق' کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں‌کہا گیا ہے کہ شمال مغربی شام میں تحریر الشام اور'حراس الدین' عسکری گروپوں کا اسدی فوج کے ساتھ تصادم ہوا جس میں کم سے کم 20 فوجی ہلاک ہوگئے۔

ادلب میں اسد رجیم کے خلاف مخالف جںگجو وں‌ کا یہ سب سے بڑا حملہ ہے۔ اس کارروائی میں جنگجوئوں کو بھی کافی جانی اور مالی نقصان پہنچایا گیا ہے۔ ادلب میں لڑائی شدت اختیار کرنے کے بعد مقامی شہریوں کا انخلاء‌بھی جاری ہے۔ گذشتہ برس ستمبر میں ترکی اور روس نے ادلب میں سیف زون کے حوالے سے ایک معاہدہ کیا تھا جس میں جنگجوئوں اور حکومت مخالف عناصر کو محفوظ راستہ دینے پر اتفاق کیا گیا تھا۔

انسانی حقوق کے مندوب رامی عبدالرحمان نے 'اے ایف پی' کو بتایا کہ اتوار کے بعد 'حراس الدین' اور 'ھیۃ تحریر الشام نامی گروپوں کے حملوں میں کم سے کم 20 سرکاری فوجی ہلاک ہوگئے۔ پانچ فوجی حلب میں ہونے والی لڑائی میں مارے گئے۔
ادھر شمالی شام میں شامی فوج کی بمباری کے نتیجے میں 9 شدت پسندوں‌کے مارے جانے کی اطلاعات ہیں۔

اسی سیاق میں سیرین آبزر ویٹری کے مطابق خان شیخون میں بمباری کے بعد ہزاروں افراد نقل مکانی پر مجبور ہوگئے ہیں۔
 

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند