تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
شمالی شام میں کرد فورسز اور ترک فوج کے درمیان شدید جھڑپیں
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعرات 19 محرم 1441هـ - 19 ستمبر 2019م
آخری اشاعت: بدھ 25 شعبان 1440هـ - 1 مئی 2019م KSA 07:26 - GMT 04:26
شمالی شام میں کرد فورسز اور ترک فوج کے درمیان شدید جھڑپیں
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ ۔ استنبول ۔ ایجنسیاں

شمالی شام کے سرحدی شہروں اعزاز اور عفرین میں ترک فوج اور کرد جنگجوئوں کے درمیان خوفناک جھڑپوں کی اطلاعات ہیں۔ یہ جھڑپیں اس وقت شروع ہوئیں جب کرد پروٹیکشن یونٹ کےجنگجوئوں‌نے ترک فوج کی ایک بکتر بند گاڑی پرحملہ کرکے ایک فوجی کوہلاک کردیا۔

ادھر روسی فوج کی طرف سے عفرین میں بمباری کے بعد تحریر الشام گروپ سے وابستہ جنگجوئوں کےخاندانوں کی نقل مکانی بھی دیکھی گئی ہے۔

ترک فوج اور کرد جنگجوئوں کےدرمیان عفرین میں خوفناک تصادم کا سلسلہ جاری ہے۔ منگل کےروز فرات کی ڈھال آپریشن میں شامل ترک فوجیوں اور کرد جنگجوئوں کےدرمیان شدید فائرنگ کا تبادلہ جاری رہا۔

قبل ازیں ترک وزارت دفاع نے شمالی شام میں ایک فوجی کےمارے جانے اور تین کےزخمی ہونے کی تصدیق کی تھی۔

خیال رہے کہ شمالی شام میں سرگرم کرد عسکری گروپ کرد پروٹیکشن یونٹ کو ترکی دہشت گرد قرار دیتا ہے۔ انقرہ نے سنہ 2016ء میں اس علاقے میں 'داعش' کےخلاف فرات کی ڈھال کے عنوان سے آپریشن شروع کیا تھا۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند