تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
یمن میں عرب اتحاد طاقتور اور مضبوط ہے: قرقاش
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 18 ربیع الثانی 1441هـ - 16 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: اتوار 18 ذیعقدہ 1440هـ - 21 جولائی 2019م KSA 12:20 - GMT 09:20
یمن میں عرب اتحاد طاقتور اور مضبوط ہے: قرقاش
دبئی ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ انور قرقاش نے اتوار کے روز ایک ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ یمن میں سعودی عرب اور عرب اتحاد مضبوط اور طاقت ور ہے۔

’’یمن میں عرب اتحاد اور بالخصوص برادر ملک سعودی عرب اور یو اے ای مضبوط اور طاقتور ہیں۔ بحرانوں اور جنگ کی بھٹی کے امتحانات سے گذرنے کے بعد اب یہ اتحاد اپنے سیاسی اور فوجی داؤ پیچوں کو اگلے مرحلے کے لئے تیار کر رہا ہے تاکہ انہیں استعمال میں لاتے ہوئے اسٹرٹیجیک اہداف حاصل کئے جا سکیں۔‘‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’’افغانستان، عراق اور شام کی جدید لڑائیاں ان کی واضح مثال ہیں۔ ان جنگوں کے مقابلے میں عرب اتحاد کو اپنے تزویراتی مقاصد میں کامیابی ملی ہے۔ بالخصوص خطے میں طاقت کے توازن اور غصب شدہ اراضی کی واپسی عرب اتحاد کی اہم کامیابیاں ہیں۔ اتحاد کا آئندہ ہدف ان جگہوں پر سیاسی استحکام کو فروغ دینا ہے۔‘‘

اس سے قبل ڈاکٹر انور قرقاش سے منسوب یہ بیان سامنے آیا تھا کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات یمن میں انسانی محاذ پر خدمت سرانجام دینے والے دو بڑے ملک ہیں۔ ان دونوں نے گذشتہ برس 930 ملین ڈالر کی امداد اقوام متحدہ کو دی تھی، جو عالمی ادارے کی تاریخ میں انسانی خدمت کی مد میں دی جانے والی سب سے بڑی امداد ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند