تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
دمشق کے قریب ایرانی اہداف پر اسرائیلی بمباری، ہلاکتوں کی اطلاع
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

پیر 16 محرم 1441هـ - 16 ستمبر 2019م
آخری اشاعت: اتوار 23 ذوالحجہ 1440هـ - 25 اگست 2019م KSA 09:16 - GMT 06:16
دمشق کے قریب ایرانی اہداف پر اسرائیلی بمباری، ہلاکتوں کی اطلاع
القدس - زياد حلبی، العربية ڈاٹ نیٹ

اسرائیلی فوج کے ترجمان نے ہفتے کی شب رات گئے ایک بیان میں انکشاف کیا کہ اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے شامی دارلحکومت دمشق کے قریب ایرانی فوج کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔

ترجمان کے مطابق اسرائیلی جہازوں نے پاسداران انقلاب کے القدس بریگیڈ کے اہلکاروں پر اس وقت آتش و آہن کی برسات کی جب وہ اسرائیل میں اہداف کو نشانہ بنانے کے لئے بغیر پائلٹ بمبار ڈرون طیارہ اڑانے کی تیاریوں میں مصروف تھے۔

ادھر ’’العربیہ‘‘ کے نامہ نگار نے بتایا ہے کہ دمشق کے قریب القدس بریگیڈ پر اسرائیلی لڑاکا طیاروں کی بمباری میں متعدد ہلاکتوں کے علاوہ مادی نقصان کی تصدیق اسرائیل فوج کر رہی ہے۔

اپنے بیان میں اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کا کہنا تھا کہ ان کی فوج نے بہت محنت اور کوششوں کے بعد اسرائیل پر حملے کی ایرانی کوشش ناکام بنا دی ہے۔ نیتن یاہو کے بقول ایران کو کہیں جائے پناہ نہیں ملے گی۔

زوردار دھماکے

اسرائیلی کارروائی کے بعد شامی حکومت کے زیر انتظام چلنے والے شامی ٹی وی نے دعوی کیا کہ شامی ائر ڈیفنس نے شامی دارلحکومت کی فضا میں ’دشمن کے میزائل‘ کو تباہ کر دیا ہے۔

دمشق میں عینی شاہدین نے بتایا کہ انھوں نے زور دار دھماکوں کی آوازیں سنیں اور اس کے بعد دمشق کے آسمان پر دھماکوں کے بعد پیدا ہونے والے اثرات کو اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے۔

شام کے 2011 سے شروع ہونے والے تنازع کے بعد سے اسرائیل کئی بار شامی سرزمین پر بشار الاسد اور ایرانی فوج سمیت لبنانی ملیشیا حزب اللہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنا چکا ہے۔

ایرانی اقدامات

اسرائیل نے اصرار کے ساتھ یہ بات کہی ہے کہ وہ ایرانی فوج کی جانب سے شام میں اپنا رسوخ بڑھانے اور حزب اللہ ملیشیا کو جدید اسلحہ پہنچانے کی کوششوں کو ناکام بنانے کے لئے اپنی کارروائیاں جاری رکھے گا۔

جولائی کے آواخر میں شام کے اندر انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے آبزرویٹری نے بتایا تھا کہ اسرائیلی میزائل حملوں میں جنوبی شام کے درعا اور القنیطرہ شہروں میں ایران نواز ملیشیاؤں کے فوجی اور انٹیلی جنس اہداف کو نشانہ بنایا گیا۔

آبزرویٹری کے مطابق ان حملوں میں بشار الاسد نواز نو جنگجو مارے گئے۔ ہلاک ہونے والوں میں تین شامی جبکہ چھے افراد کا تعلق ایران سے بتایا گیا تھا۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند