تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
لبنان میں حکومت کا استعفاء سامنے آ سکتا ہے : نائب وزیراعظم
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

ہفتہ 18 ربیع الاول 1441هـ - 16 نومبر 2019م
آخری اشاعت: جمعہ 18 صفر 1441هـ - 18 اکتوبر 2019م KSA 12:20 - GMT 09:20
لبنان میں حکومت کا استعفاء سامنے آ سکتا ہے : نائب وزیراعظم
بیروت - جونی فخری

لبنان کے نائب وزیراعظم غسان حاصبانی کا کہنا ہے کہ لبنان میں معاملات ابھی تک غیر واضح ہیں اور عوام کی جانب سے جو احتجاج سامنے آ رہا ہے ، اس حوالے سے پہلے ہی متنبہ کر دیا گیا تھا۔

جمعے کے روز العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے حاصبانی کا کہنا تھا کہ ابھی تک واضح نہیں کہ کیا موجودہ حکومت باقی رہے گی ؟ اس کا متبادل کیا ہے ؟ کیا ٹکنوکریٹس پر مشتمل ایک حکومت تشکیل دی جائے گی جس کا مشن لبنان میں مطلوبہ اصلاحات کا نفاذ ہو تا کہ وسائل کا ضیاع روکا جا سکے ؟

الحصبانی نے باور کرایا کہ "لبنانی فورسز" پارٹی پہلے بھی ٹکنوکریٹس کی حکومت کی تشکیل کا مطالبہ کرتی رہی اور اب بھی کرتی ہے اس لیے کہ حالات اس نوعیت کی حکومت کا تقاضا کرتے ہیں۔

لبنان کے نائب وزیراعظم کے مطابق یہ دیکھنا ہو گا کہ بنیادی مسئلہ حکومت کے ساتھ ہے یا پھر پوری ریاست کو چلانے کے طریقہ کار کے ساتھ ؟ الحاصبانی نے واضح کیا کہ لبنان میں حکومت کی انتظامیہ کا مکمل بحران ہے اور اسے تبدیل کرنا ضروری ہے تا کہ ان حالات کو درست کیا جا سکے جہاں ہم پہنچ چکے ہیں۔

نائب وزیراعظم الحصبانی نے کہا کہ "ہمارے سامنے تمام آپشنز کھلے ہیں جن میں حکومت کا مستعفی ہونا بھی ہے۔ معلوم رہے کہ حکومت میں ہماری موجودگی بنیادی طور پر ایک ہی سمت میں خود سری کو روکنے کے لیے ہے"۔

حاصبانی نے باور کرایا کہ "لبنان کی سڑکوں پر جو کچھ ہو رہا ہے اس کی وجہ واٹس ایپ پر ٹیکس لاگو کرنا نہیں اور نہ یہ کوئی سازش ہے ... یہ یقینا بحرانی صورت حال سے نمٹنے کی بری انتظامیہ اور خطے میں سیاسی تبدیلوں کا امتزاج ہے اور لبنان میں ہر فریق اس سے فائدہ اٹھانا چاہتا ہے"۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند