تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
پاکستان کی سعودی عرب کو سی پیک میں تیسرا تزویراتی شراکت دار بننے کی باضابطہ دعوت
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعرات 17 صفر 1441هـ - 17 اکتوبر 2019م
آخری اشاعت: جمعہ 10 محرم 1440هـ - 21 ستمبر 2018م KSA 07:12 - GMT 04:12
پاکستان کی سعودی عرب کو سی پیک میں تیسرا تزویراتی شراکت دار بننے کی باضابطہ دعوت
وزیراعظم عمران خان کے دورے کے موقع پر پاکستان نے سعودی عرب کو سی پیک میں تزویراتی شراکت دار کے طور پر شمولیت کی دعوت دی ہے۔
العربیہ ڈاٹ نیٹ

پاکستان نے سعودی عرب کو پاک چین اقتصادی راہ داری منصوبے( سی پیک ) میں تیسرا تزویراتی شراکت بننے کی باضابطہ طور پر دعوت دے دی ہے۔

پاکستان کی جانب سے یہ دعوت وزیراعظم عمران خان کے حالیہ دورۂ سعودی عرب کے موقع پر دی گئی ہے۔وفاقی وزیراطلاعات فواد چودھری نے جمعرات کو اسلام آباد میں ایک نیوز کانفرنس میں اس دورے کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ پاکستان کا مفاد سعودی عرب کے ساتھ تجارت اور سکیورٹی کے شعبے میں تعاون کے فروغ میں پنہا ں ہے‘‘۔

انھوں نے بتایا کہ ’’ دونوں ممالک میں تجارت اور کاروبار کے فروغ سے متعلق امور کی نگرانی کے لیے اعلیٰ سطح کی ایک رابطہ کمیٹی قائم کردی گئی ہے ۔اس کمیٹی کو خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور وزیراعظم عمران خان کی مکمل سرپرستی حاصل ہے‘‘۔

انھوں نے کہا کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے اعلیٰ سطح کے وفود اکتوبر میں پاکستان کا دورہ کریں گے اور وہ باہمی تجارت کے فروغ اور سکیورٹی سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔سعودی عرب سے آنے والے وفد میں وزیر خزانہ اور وزیر توانائی کے علاوہ نمایاں کاروباری شخصیات شامل ہوں گی ۔اس دورے میں پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان اقتصادی شراکت داری کو حتمی شکل دی جائے گی۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ’’ سعودی عرب پہلا ملک ہے جس کو پاکستان نے سی پیک میں تیسرا شراکت دار بننے کی پیش کش کی ہے۔وہ سی پیک کے تحت جن منصوبوں میں سرمایہ کاری کرے گا ،ان کے بارے میں سعودی وفد کے دورے کے موقع پر تفصیل طے کر لی جائے گی۔ ہم سعودی عرب کی جانب سے ان منصوبوں میں بھاری سرمایہ کاری کی توقع کررہے ہیں‘‘۔

فوادچودھری نے کہا کہ ’’ ہم نے دوطرفہ تزویراتی تعاون کا ازسرنو عزم کیا ہے۔ہم نے سعودی قیادت کو یقین دہانی کرائی ہے کہ ہم ان کے ملک کو سکیورٹی مہیا کرنے کا سلسلہ جاری رکھیں گے اور جہاں بھی ضرورت پڑی،انھیں تزویراتی امداد مہیا کریں گے‘‘۔

انھوں نے بتایا کہ ابو ظبی میں وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستانی وفد کا ولی عہد شہزادہ محمد بن زاید آل نہیان نے استقبال کیا تھا۔ان سے ملاقات میں باہمی دلچسپی کے دوطرفہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

نئی حکومت کے وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ گذشتہ چند سال کے دوران میں پاکستا ن کے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ تعلقات سرد مہری کا شکار رہے ہیں لیکن اس دورے نے اب حالات کو تبدیل کردیا ہے۔یو اے ای کے ویزے کے حصول میں حائل پیچیدگیوں اور دوسرے مسائل کو بہت جلد حل کر لیا جائے گا۔

انھوں نے صحافیوں کو بتایا کہ دورے میں اس موضوع پر بھی اماراتی قیادت سے بات چیت ہوئی ہے۔پاکستان کا دفتر خارجہ بہت جلد اس ضمن میں یو اے کو ایک تجویز بھیجے گا اور توقع ہے کہ متحدہ امارات میں پھنسے ہوئے ہزاروں پاکستانیوں کو درپیش ویزے سے متعلق مسائل حل ہو جائیں گے۔نیز یو اے ای پاکستان کو کراچی میں تازہ پانی کی بہم رسانی سمیت مختلف منصوبوں میں مدد دے گا۔اماراتی وفد کے آیندہ دورہ پاکستان کے موقع پر اس حوالے سے امور پر تبادلہ خیال کیا جائے گا اور تفصیلات طے کی جائیں گی۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند