تمام حقوق بحق العربیہ نیوز چینل محفوظ ہیں © 2019

دوست کو بھیجئے

بند کیجئے
جسٹس گلزاراحمد پاکستان کے نئے چیف جسٹس مقرر
دوست کا نام:
دوست کا ای میل:
بھیجنے والے کا نام:
بھیجنے والے کا ای میل:
Captchaکوڈ

 

جمعہ 15 ربیع الثانی 1441هـ - 13 دسمبر 2019م
آخری اشاعت: بدھ 6 ربیع الثانی 1441هـ - 4 دسمبر 2019م KSA 20:57 - GMT 17:57
جسٹس گلزاراحمد پاکستان کے نئے چیف جسٹس مقرر
جسٹس گلزار احمد موجودہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی ریٹائر منٹ کے ایک روز بعد 21 دسمبر کو اپنا منصب سنبھالیں گے۔
اسلام آباد ۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ

حکومتِ پاکستان نے جسٹس گلزار احمد کو سپریم کورٹ کا نیا چیف جسٹس مقرر کیا ہے۔وزارتِ قانون نے صدر عارف علوی کی منظوری کے بعد بدھ کو ان کا تقرر نامہ جاری کردیا ہے۔

جسٹس گلزار احمد موجودہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی ریٹائر منٹ کے ایک روز بعد 21 دسمبر کو اپنا منصب سنبھالیں گے۔جسٹس کھوسہ اپنی مدتِ ملازمت پوری ہونے کے بعد 20 دسمبر کو بہ طور چیف جسٹس ریٹائر ہورہے ہیں۔

جسٹس گلزار احمد 2 فروری 1957ء کو کراچی میں پیدا ہوئے تھے، ان کے والد نورمحمد کا کراچی کے ممتاز وکلاء میں شمار ہوتا تھا۔سپریم کورٹ کی ویب سائٹ کے مطابق انھوں نے کراچی کے گلستان اسکول میں ابتدائی تعلیم حاصل کی تھی۔انھوں نے گورنمنٹ نیشنل کالج کراچی سے آرٹس میں بیچلر کی ڈگری حاصل کی اور ایس ایم لا کالج کراچی سے قانون کی ڈگری حاصل کی تھی۔

ان کا 18 جنوری 1986ء کو ایک وکیل کی حیثیت سے کراچی بار میں اندراج ہوا تھا۔وہ 4 اپریل 1988ء کو ہائی کورٹ کے وکیل بنے تھے اور 15 ستمبر 2001ء کو سپریم کورٹ کے وکیل بن گئے تھے۔

جسٹس گلزار احمد سندھ ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کراچی کے سال 1999-2000ء میں اعزازی سیکریٹری منتخب ہوئے تھے۔انھوں نے قانون کی پریکٹس کے دوران میں زیادہ تر دیوانی کارپوریٹ مقدمات کی پیروی کی اور کئی ایک کثیرقومی اور مقامی کمپنیوں ، بنکوں اور مالیاتی اداروں کے قانونی مشیر رہے تھے۔¬¬¬

انھیں 27 اگست 2002ء کو سندھ ہائی کورٹ کا جج مقرر کیا گیا تھا۔ وہ مختلف اعلیٰ تعلیمی اداروں کے بورڈ آف گورنرز کے رکن رہ چکے ہیں۔ ان میں انسٹی ٹیوٹ آف بزنس اینڈ ٹیکنالوجی ،این ای ڈی یونیورسٹی آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی ،سرسیّد یونیورسٹی آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی ،اقرا یونیورسٹی اور آغا خان یونیورسٹی کراچی شامل ہیں۔

جسٹس گلزار احمد کو 16 نومبر 2011ء کو عدالتِ عظمیٰ پاکستان کا جج مقرر کیا گیا تھا۔اس وقت وہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کے بعد سب سے سینیر جج ہیں اور دو مرتبہ ان کی ملک میں عدم موجودگی کے وقت قائم چیف جسٹس کی حیثیت سے خدمات انجام دے چکے ہیں۔انھوں نے اندرون اور بیرون ملک قانون کے مختلف موضوعات پرکئی ایک بین الاقوامی کانفرنسوں اور ورکشاپوں میں بھی شرکت کی ہے۔

نقطہ نظر

مزید

قارئین کی پسند