.

سعودی بینڈ کی کاوش، کوریا کے ہٹ گانگ نام طرز کی پیروڈی تیار

گلوکاروں کے ڈھیلے ڈھالے لباس کی سعودی عرب میں مقبولیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سعودی عرب کے نوجوانوں کے ایک گروپ نے جنوبی کوریا کے پاپ ریپر پارک جائی سانگ المعروف سائی کے ''گانگ نام اسٹائل'' کا مقامی ورژن تیار کر لیا ہے۔

سعودی ورژن تیار کرنے والے نوجوان بھی جنوبی کوریا کے مشہور پاپ گانے کی طرز پر سفید بنیان اور پاجاموں میں ملبوس ہو کر اپنے فن کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ان کا یہ لباس مملکت کے بعض علاقوں میں اتنا مقبول ہوا ہے کہ وہاں اچھے خاصے مرد حضرات بھی ان کی دیکھا دیکھی بنیانوں اور سفید کھلے پاجاموں میں ملبوس نظر آتے ہیں۔اس پر ان کی بیگمات ان سے شکایت کرتی نظر آتی ہیں کہ انھوں نے اپنے کیا حُلیے بنا رکھے ہیں۔

جنوبی کوریا کا سائی گانا دنیا بھر میں بہت مقبول ہوا ہے اور ویڈیو شئیرنگ کی ویب سائٹ یو ٹیوب پر اس کو باسٹھ کروڑ سے زیادہ افراد دیکھ چکے ہیں۔ زیادہ تر افراد نے اس کو بینڈ کے منفرد ڈانس کی وجہ سے دیکھا اور پسند کیا ہے۔

''گانگ نام اسٹائل'' کوریا کی مقبول عام موسیقی کی ایک مثال ہے۔اس کو ''کے پاپ'' کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ یہ ایشیا اور پوری دنیا میں مقبولیت حاصل کر رہا ہے۔ کوریا طرز کا گانا خاص طور پر مشرق وسطیٰ، مشرقی یورپ اور جنوبی امریکا میں بہت مقبول ہوا ہے اور اس کی مقبولیت کے پیش نظر ہی سعودی بینڈ نے اس کی پیروڈی تیار کی ہے۔

واضح رہےکہ گانگ نام جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول کے ایک پوش علاقے کا نام ہے۔ اس گانے میں ''اسٹائل'' سے مراد لگژری، فضول خرچی، جدت پسندی اور اسراف مراد ہے۔