.

مکہ مکرمہ خیالی یہودیہ بیوی کی تلاش میں سرگرداں سعودی گرفتار

مسجدالحرام میں کاغذات بانٹنے والے شخص پر جنونی ہونے کا شُبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سعودی پولیس نے مکہ مکرمہ میں مسجد الحرام کے احاطے میں ایک ادھیڑ عمر شخص کو اپنی خیالی یہودیہ بیوی کی تلاش کے لیے کاغذات بانٹنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

مسجد الحرام کے امور کی ذمے دار پولیس کے ترجمان عبدالمحسن میمن نے بتایا ہے کہ ایک انچاس سالہ سعودی شہری ایک یہودیہ کی تلاش کے لیے نمازیوں میں کاغذ تقسیم کر رہا تھا اور وہ ممکنہ طور پر اس یہودیہ سے شادی کرنا چاہتا تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ سعودی شہری نفسیاتی عارضے میں مبتلا لگتا ہے۔

عربی روزنامے الحیات کی رپورٹ کے مطابق پولیس ترجمان نے بتایا کہ اس شخص کے قبضے سے پانچ دستاویزات ملی ہیں اور ان میں اس شخص کی ذہنی صحت کے حوالے سے متضاد معلومات درج ہیں۔ایک میں اس نے یہودیہ عورت سے شادی کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔

لیفٹننٹ میمن نے اس سے قبل اس شخص کے بارے میں سامنے آنے والی ان اطلاعات کی تردید کی ہے کہ وہ عبادت گزاروں میں ایسے کاغذات تقسیم کررہا تھا جن میں اس نے اپنی خیالی یہودیہ بیوی کی تلاش میں مدد دینے کی اپیل کی تھی۔

ترجمان نے بتایا کہ اس شخص کو تفتیش کے لیے پولیس حکام کے حوالے کر دیا گیا ہے اور ضروری قانونی کارروائی کے بعد اس کو علاج کے لیے کسی خصوصی معالج کے پاس بھیجا جا سکتا ہے۔