برطانوی اخبار میں صہیونی وزیر اعظم کے کارٹون کی اشاعت کی مذمت

آزادیٔ اظہار کے نام نہاد علمبرداروں کا حقیقی چہرہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانوی اخبار میں اس کارٹون کی اشاعت سے صرف ایک روز قبل ہی ایک رکن پارلیمان کو اپنے بلاگ میں اسرائیل پر تنقید کی پاداش میں معافی مانگنا پڑ گئی تھی۔برطانیہ کے لبرل ڈیمو کریٹ رکن پارلیمان ڈیوڈ وارڈ نے اپنے بلاگ میں یہودیوں کے فلسطینیوں پر مظالم کو نازی جرمن کے یہود پر ڈھائے گئے ہولوکاسٹ مظالم کے مشابہ قرار دیا تھا۔

فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی مظالم کی مذمت میں یہ الفاظ سامنے آنے کے ساتھ ہی ڈیوڈ وارڈ پر سوشل میڈیا کی سائٹس پر کڑی تنقید شروع کردی گئی۔اس پر انھیں ہفتے کے روز ایک معافی نامہ جاری کرنا پڑا۔ اس میں انھوں نے لکھا کہ ''وہ یہود پر مجموعی طور پر کوئی حملہ نہیں کرنا چاہتے تھے اور نہ کسی خاص نسل یا عقیدے کے لوگوں کو وہ نشانہ بنانا چاہتے تھے''۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں