.

الرقہ کے سردار کی حافظ الاسد سے نفرت، عربی چغہ حرام کر لیا

اہل علاقہ نے گزشتہ روز مجسمہ گرا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمالی شہر الرقہ کے ایک قبائلی سردار الشیخ فیصل الحسن الصیاح نے دو برس قبل ایک ٹی وی ٹاک شو میں اپنا عربی جبہ اچانک اتارتے ہوئے عہد کیا کہ وہ اپنی عروبہ کی اس شناخت کو خود پر اس وقت تک نہیں پہنیں گے۔ ان کے پیروکاروں نے دو برس بعد شام کے سابق صدر حافظ الاسد کا اپنے شہر میں نصب یادگاری مجسمہ گرا کہ انہیں اپنی عرب دستار دوبارہ زیب تن کرنے کا موقع فراہم کیا ہے۔

الرقہ شہر قبضہ کرنے والی جیش الحر نے ایک ویڈیو انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کی ہے جس میں غصے میں بپھرے عوام حافظ الاسد کے مسجمہ کے پاس کھڑے ہیں۔ دوسری آن میں حافظ الاسد کا قد آدم مسجمہ منہ کے بل گرتا ہے اور لوگ اس پر ٹوٹ پڑتے ہیں۔ بعض کارکن نفرت آمیز فلک شگاف نعرے لگاتے ہوئے جوتوں سے مجسمہ کو پیٹتے دیکھے جا سکتے ہیں۔