.

ایران کی امریکا کو لاپتا ایجنٹ کی تلاش میں مدد کی پیش کش

ایف بی آئی کا 10 لاکھ ڈالرز انعام کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے امریکا کو ایک مرتبہ پھر وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف بی آئی) کے گذشتہ چھے سال سے لاپتا ایجنٹ کا سراغ لگانے میں مدد کی پیش کش کی ہے۔

امریکا نے گذشتہ جمعہ کو اپنے حریف ملک ایران سے خلیجی جزیرے کیش میں لاپتا ہوجانے والے رابرٹ لیونسن کی تلاش میں مدد کی اپیل کی تھی۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایرنا نے وزیرخارجہ علی اکبر صالحی کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں انھوں نے کہا کہ ''ہم پہلے بھی بہت مرتبہ یہ کہہ چکے ہیں کہ ہمیں اس سلسلہ میں کوئی معلومات نہیں ہیں''۔

انھوں نے کہا''ہم پہلے بھی کئی مرتبہ یہ کہہ چکے ہیں کہ ہم انسانی ہمدردی کی بنیاد پر اس امریکی کی تلاش کے ضمن میں تعاون کرنے کو تیار ہیں اور لیونسن کا سراغ لگانے کے لیے انٹیلی جنس معلومات کے تبادلے کو بھی تیار ہیں ''۔

علی اکبر صالحی نے کہا کہ میں ایک مرتبہ پھر یہ بات دہرانا چاہتا ہوں کہ یہ شخص ایران میں نہیں ہے اور امریکی بھی اس سے پہلے یہ بات تسلیم کرچکے ہیں۔

یادرہے کہ 2011ء میں سابق امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے ایک بیان میں کہا تھا :''امریکا کوایسی معلومات ہیں جن سے پتا چلتا ہے کہ لیونسن جنوب مغربی ایشیا میں ہے''۔انھوں نے امریکا پر زوردیا تھا کہ وہ ان کا سراغ لگانے میں مدد کرے۔

گذشتہ جمعہ کو امریکا نے ایک مرتبہ پھر ایران سے یہ اپیل کی ہے جبکہ ایف بی آئی نے لیونسن کی محفوظ واپسی کے لیے معلومات فراہم کرنے پر دس لاکھ ڈالرز کی رقم انعام کے طور پر دینے کا اعلان کیا ہے۔