.

امریکی صدر کا دورۂ اسرائیل ''گیم شو'' بن گیا

صدر اوباما کی تقریر فیس بک پرلائک اور تبصرے کی محتاج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل میں امریکی سفارت خانے نے صدر براک اوباما کے اسی ماہ دورے کے موقع پر ان کی تقریر کے سامعین کے انتخاب کے لیے سماجی روابط کی ویب سائٹ فیس بُک پر ایک مقابلہ شروع کیا ہے۔

امریکی سفارت خانے نے اپنے فیس بُک صفحے پر ،انگریزی ،عربی اور عبرانی زبان میں لکھا ہے کہ ''اگر آپ صدر اوباما کی تقریر کی تقریب میں شرکت کرنا چاہتے ہیں تو ہمارے صفحے کو پسند(لائک) کریں اور نیچے یہ تبصرہ کریں کہ ہم آپ کو کیوں یہ خطاب سننے کی دعوت دیں''۔

اس پیغام میں سفارت خانے نے مزید لکھا ہے کہ ''تخلیقی اور حقیقی ردعمل دینے والے فیس بُک کے ہمارے بیس مداح صدر براک اوباما کی بالمشافہ تقریر سماعت کرسکیں گے''۔

اسرائیلی اخبار یروشیلم پوسٹ نے امریکی سفارت خانے کی اس فخریہ پیش کش پر صدراوباما کے دورے کو ایک گیم شو قراردے دیا ہے۔امریکی سفارت خانے کا پیغام پوسٹ ہونے کے چار گھنٹے کے اندر 375 قارئین کا ردعمل سامنے آیا تھا۔ان میں سے بعض نے تو مذکورہ تحریر اور امریکی صدر کے دورے کا مضحکہ اڑایا ہے اور بعض نے سنجیدہ تبصرے کیے ہیں کہ وہ ان کی تقریر کیوں سننا چاہتے ہیں۔

صدر اوباما دورے میں اسرائیل آئرن ڈوم میزائل دفاعی نظام کا معائنہ کریں گے اور ہولوکاسٹ کی یادگار یادویشم پر جائیں گے۔وہ اسرائیلی صدر شمعون پیریز اور وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو سے ملاقات کریں گے۔ وہ جدید صہیونیت کے بانی تھیوڈور ہرزل اور سابق اسرائیلی وزیراعظم اضحاک رابن کی قبروں پر پھول چڑھائیں گے۔وہ مغربی کنارے میں فلسطینی صدر محمود عباس سے بھی ملاقات کریں گے۔