.

بغداد: وزارتوں کے باہر تین بم دھماکوں میں 21 افراد ہلاک

وزارت انصاف میں خود کش دھماکے کے بعد مسلح افراد کا حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد میں انتہائی سکیورٹی والے علاقے گرین زون کے نزدیک مختلف وزارتوں اور سرکاری دفاتر کے باہر بم دھماکوں میں اکیس افراد ہلاک اورپچاس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

عراقی حکام کے مطابق جمعرات کو بغداد کے وسطی علاقے علاوی میں وزارت انصاف، وزارت داخلہ اور وزارت مواصلات کے ایک دفتر کے باہر یکے بعد دیگردوکار بم دھماکے ہوئے ہیں۔

پولیس کے مطابق کار میں سوار ایک خودکش بمبار نے اپنی بارود سے بھری کار کو وزارت انصاف میں دھماکے سے اڑا دیا۔اس کے بعد مسلح جنگجو عمارت کے اندر داخل ہوگئے اور ان کی پولیس کے ساتھ لڑائی شروع ہوگئی۔بم دھماکوں میں مرنے والوں میں چھے پولیس اہلکار اور بارہ شہری ہیں۔

عینی شاہدین نے العربیہ کو بتایا کہ دوخودکش بمباروں نے انصاف اور داخلہ امور کی وزارتوں کے باہر دھماکے کیے ہیں اور اسی علاقے میں بارود سے بھری ایک کار کو دھماکے سے اڑا دیا گیا۔

فوری طور پر کسی گروپ نے ان بم حملوں کی ذمے داری قبول نہیں کی لیکن عراق میں القاعدہ سے وابستہ گروپ ریاست اسلامی عراق پر ماضی میں سکیورٹی فورسز پر بم حملوں کا الزام عاید کیا جاتا رہا ہے۔واضح رہے کہ عراق سے 2011ء میں امریکی فوج کے انخلاء کے بعد سے تشدد کے واقعات میں کوئی کمی واقع نہیں ہوئی اور ہرماہ دوتین سو افراد خودکش بم حملوں،بم دھماکوں یا تشدد کے دوسرے واقعات میں مارے جا رہے ہیں۔