.

بلوچستان سے چیک خواتین سیاحوں کا اغوا

چیک سفارتخانہ تبصرے کے لئے دستیاب نہیں تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سرکاری حکام کے مطابق بدھ کے روز بلوچستان میں نامعلوم مسلح افراد نے ریپبلک چیک کی دو خاتون سیاحوں کو اغوا کر لیا ہے۔

مقامی سرکاری حکام کے مطابق خواتین سیاح ایران سے صوبہ میں داخل ہوئیں تھیں۔ جہاں سے انھیں اغوا کر لیا گیا۔

صوبہ کے ہوم سیکرٹری اکبر حسین درانی نے خبر رساں ایجنسی 'اے ایف پی' کو بتایا کہ دونوں خواتین کا تعلق ریپبلک چیک سے ہے اور وہ پاکستان میں سیاحوں کے طور پر داخل ہوئیں تھیں۔

درانی نے کہا کہ مسلح افراد نے چاغی ضلعہ کے علاقے ناک کنڈی میں سیاحوں کی بس کو رکوایا اور ان دونوں کو اغوا کر لیا۔

چیک سفارتخانے میں کوئی بھی تبصرہ کرنے کے لیئے دستیاب نہیں تھا۔ لیکن کوئٹہ کے سینیئر سرکاری افسر قمبر دستی نے اس واقعے کی تصدیق کی ہے۔

بلوچستان میں اغوا روز کا معمول بن گیا ہے جہاں پر جرائم پیشہ افراد مقامی اور غیر ملکی افراد کو یرغمال بنا کر تاوان وصول کرتے ہیں کبھی کبھی طالبان اور القاعدہ سے تعلق رکھنے والے گروپ بھی لوگوں کو یرغمال بنا کر رکھتے ہیں۔

حالیہ برسوں میں بلوچستان ایک شورش زدہ صوبہ ہے جہاں پر بلوچ قوم پرست صوبہ کے وسائل پر اپنا حصہ چاہتے ہیں جو قدرتی گیس اورمعدنیات سے مالا مال ہے۔