.

امریکا: سابق فوجیوں کے امور کا قلم دان ڈاکٹر کے سپرد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے اپنی کابینہ میں ڈرامائی انداز میں تبدیلیوں کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔ رات گئے انہوں نے پرانے فوجیوں کے امور کے وزیر ڈیوڈ شولکن کو ان کے عہدے سے ہٹا کر وائیٹ ہاؤس کے ایک ڈاکٹر رونی جکسن کو وزارت کا قلم دان سونپ دیا۔

امریکی صدرجنہوں نے گذشتہ ماہ وزیرخارجہ اور قومی سلامتی کے مشیر کوتبدیل کردیا تھا نے تازہ تبدیلی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’ایڈمرل رونی ایل جکسن کو پرانے فوجیوں کےامور کے وزیر کے طورپر مقرر کیے جانے پر خوشی ہے۔ جکسن ایک قابل احترام شخصیت ہیں اور وائیٹ ہاؤس میں انہیں قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ انہیں پرانے فوجیوں کے امور کے وزیر کا قلم دان سونپا جا رہا ہے’۔

انہوں نے سبکدوش وزیر شولکن کی خدمات کوبھی سراہا اور کہا کہ میں ذاتی طورپر سبکدوش وزیر کی خدمات کا شکر گذار ہوں۔ انہوں نے وطن اور عظیم سابق فوجیوں کے حوالے سے بہت کچھ کیا۔

کانگریس کی جانب سے جکسن کی تعیناتی کی توثیق تک پرانے فوجیوں کے امور کا قلم دان عبوری طورپر پینٹاگون کے عہدیدار روبرٹ ویلکی سنھبالیں گے۔

ڈیوڈ شولکن کی سبکدوشی کی وجہ سامنے نہیں آسکی تاہم ان پر ایک الزام یہ ہے کہ وہ اپنی اہلیہ کے ہمراہ یورپ کے دورے پر گئے تھے۔ اس دورے کے دوران انہوں نے قومی خزانے سے 1 لاکھ 22 ہزار امریکی ڈالر خرچ کیے تھے۔