عرب لیگ میں واپسی کے باوجود شام پر حملہ کریں گے: اسرائیل

اس حوالے سے عالمی برادری کو پیغامات پہنچا دیے گئے ہیں: اسرائیلی عہدیدار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک اسرائیلی عہدیدار نے اعلان کیا ہے کہ عرب لیگ میں شام کی واپسی سے اسرائیل کی جانب سے شام کی سرزمین کے اندر کی گئی کارروائی پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ صہیونی عہدیدار نے کہا ان کی حکومت نے اس سلسلے میں عالمی برادری کو واضح پیغامات پہنچا دیے ہیں۔ یہ واضح کردیا گیا ہے کہ ایک مرتبہ پھر عرب دنیا میں شام کی قانونی حیثیت کی بحالی اسرائیل کو اس پر حملہ کرنے سے نہیں روکے گی۔

اسرائیلی عہدیدار نے مزید کہا کہ "اس سے شام میں اسرائیل کے اقدامات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ " اسرائیلی عہدیدار کی یہ یقین دہانی اسرائیلی سکیورٹی اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے اس خدشے کے اظہار کے بعد سامنے آئی ہے کہ شام کی عرب لیگ میں واپسی سے وہاں اسرائیل کی کارروائیاں متاثر ہو سکتی ہیں۔

عبرانی ویب سائٹ ‘‘ وائے نیٹ’’ کے مطابق اسرائیلی وزیر دفاع یوو گیلنٹ نے گزشتہ ہفتے ایک اجلاس منعقد کیا، اس اجلاس میں اعلیٰ سکیورٹی حکام نے شرکت کی اور شام کی عرب لیگ میں واپسی کا جائزہ لیا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ اسرائیل مستقبل قریب میں صورتحال کا جائزہ لینے کا انتظار کر رہا ہے لیکن اس وقت وہ اپنی پالیسی تبدیل نہیں کرے گا۔

شام کے صدر بشار الاسد نے جمعہ کو سعودی عرب کے شہر جدہ میں منعقد ہونے والے 32 ویں عرب سربراہی اجلاس میں شرکت کی تھی۔ واضح رہے اسرائیل باقاعدگی سے شام کے علاقوں میں حملے کرتا آرہا ہے۔ اسرائیل عام طور پر شام میں ایرانی ملیشیا کو نشانہ بناتا ہے۔ ایرانی نواز گروہ شام میں اپنی جگہ تبدیل کرتے رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں