.

سعودی شہری کے گھر سے تیل نکل آیا

مکان الیکٹریسٹی کمپنی کے دفتر، پٹرول پمپ کے قریب واقع ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے سیکیورٹی حکام نے ملک کے جنوبی شہر جازان میں ایک شہری کے گھر میں تیل کے ایک کنوئیں کی موجودگی کا سراغ لگایا ہے۔

جازان کےایک سیکیورٹی ذریعے نے بتایا کہ ایک مقامی شہری نے اپنے گھر میں تیل کی تلاش کے لیے کنوئیں کی کھدائی شروع کی۔ چوبیس میٹر کھدائی کرنے کے بعد خام قدرتی تیل نکلنا شروع ہو گیا، جس کے بعد اس نے مقامی حکام کو اس کے بارے میں آگاہ کیا تھا۔

کنوئیں کا پتہ چلنے کے بعد شہری دفاع، وزارت پانی، میونسپلٹی اور الیکٹریسٹی کمپنی کے ماہرین پر مشتمل ایک مشترکہ کمیٹی بھی 'کنوئیں' کا جائزہ لینے بھیجی گئی تھی جس نے خام تیل کے نمونے حاصل کرنے کے بعد تصدیق کر دی ہے کہ کنوئیں میں خام ڈیزل موجود ہے۔

حکام کے مطابق جازان میں گھر کے اندر کھودے گئے کنوئیں سے خام ڈیزل نکلا ہے۔ یہ کنوئیں مقامی الیکٹریسٹی کمپنی سے 200 میٹر جبکہ ایک پٹرول پمپ سے 370 میٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پٹرول اسٹیشن کے مالک نے ایک ماہ تک آئل ٹینکروں کو خالی کرنے کے بعد کنوئیں کے قریب ہی کھڑا کرنا اور ان کی مرمت کا کام شروع کرایا، لیکن اس دوران مقامی واٹرسپلائی کمپنی نے تیل سے پانی کی آلودگی کی شکایت پر اس امر کی تحقیقات شروع کیں کہ آیا پانی میں کیسے آلودہ ہو رہا ہے۔ اس ضمن میں آلودگی کا باعث بننے والے تیل کا سر چشمہ تلاش کرنے کے لیے تیل کی تلاش کرنے والی کمپنی "ارامکو" سے بھی مدد لی گئی اور اسے جیوزفزیائی سروے کرنے کو کہا گیا تھا۔