.

ترک ڈرامے مشرق وسطیٰ کے بعد پاکستان، روس اور چین میں مقبول

ٹی وی ڈرامے 54 ممالک میں دیکھے جارہے ہیں،15 کروڑ ڈالرز زرمبادلہ کمایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے ٹیلی ویژن ڈراموں نے مشرق وسطیٰ میں مقبولیت کے ریکارڈ قائم کرنے کے بعد اب پاکستان ،چین ،روس اور یوکرین میں بھی اپنے ناظرین کا بڑا حلقہ پیدا کر لیا ہے اور ان ممالک میں 2013ء سے ترک ٹی وی ڈرامے بڑے شوق سے دیکھے جارہے ہیں۔

ترک ڈراموں کی بیرون ملک برآمد سے ترکی کو مالی فائدہ بھی ہوا ہے۔ترک وزیراعظم کے دفتر برائے پبلک ڈپلومیسی کی ایک رپورٹ کے مطابق سال 2013ء کے دوران ترکی کے ڈراما سیکٹر کی برآمدات سے پندرہ کروڑ ڈالرز کا زرمبادلہ آیا ہے۔

اس رپورٹ کے مطابق ستر سے زیادہ ترک ڈرامے دنیا بھر کے چوّن ممالک میں دیکھے جارہے ہیں۔حالیہ مہینوں میں یوکرین ،پاکستان ،روس اور چین میں ترک ڈرامے ان ممالک کی مقامی زبانوں میں ڈب کر کے دکھائے جارہے ہیں اور ان ممالک کے عوام نے ان ڈراموں میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

ترک ڈرامے عالمی مارکیٹ میں 2000ء کے وسط سے دوسرے ممالک کے ڈراموں کا مقابلہ کررہے ہیں لیکن ان کے ناظرین کی تعداد بالعموم دوسرے ممالک میں بنے ڈراموں سے زیادہ ہوتی ہے۔

دنیا بھر کے ممالک میں جو ترک ڈرامے سب سے زیادہ دیکھے گئے یا دیکھے جارہے ہیں،ان میں ''شاندار صدی''،''فاطمہ گل کا کیا قصور تھا'' ،''ممنوعہ محبت'' اور ''نور'' شامل ہیں۔واضح رہے کہ ''نور'' کی آخری قسط کو مشرق وسطیٰ کے ممالک میں آٹھ کروڑ چالیس افراد نے دیکھا تھا۔

ترکی کی وزارت سیاحت وثقافت کے مطابق پہلے ترک ڈرامے کی ایک قسط پینتیس اور پچاس ڈالرز کے درمیان فروخت ہوتی تھی لیکن اب یہ قیمت بڑھ کر فی قسط پانچ سو ڈالرز سے دولاکھ ڈالرز تک ہوچکی ہے۔