دمدار بھارتی بچہ یا ہنومان کا بندر، پوجا جاری

عمار سنگھ کی کمر پر 30 سینٹی میٹر لمبے بالوں کی چٹیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہندُو دھرم کے ماننے والوں کے لیے کسی بھی مافوق الفطرت چیز کو خدا کا درجہ دینے میں زیادہ دِقت نہیں ہوتی اور تواہم پرستی کے اسیر کسی بھی اچھی بری چیز کو خدا کا درجہ دے کر اس کی پوجا پاٹ شروع کر دیتے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بھارت کی شمالی ریاست اتر پردیش میں چھ سال کے ایک بچے کی کمر پر بالوں کی دُم نما چٹیا نکل آنے پر ہندؤں نے اسے بھی "ہنومان کا بندر" قرار دیتے ہوئے اس کی پوجا پاٹ شروع کر دی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اتر پردیش کے نیگما پور گاؤں کے رہائشی چھ سالہ عمار سنگھ کی کمر کے نچلے حصے میں پیدائش سے بال نکلنا شروع ہوئے جو اب تیس سینٹی میٹر لمبی ایک مینڈلی کی شکل اختیار کر چکے ہیں۔ مقامی ہندو باشندے اسے ہنومان دیوی کی شبیہ قرار دے کر اس کی پوجا کرنے آتے ہیں۔

عمار سنگھ کے اہل خانہ کا کہنا ہےکہ بچے کی کمر پر پیدائش کے وقت ایک انچ لمبے بال تھے جو وقت گذرنے کے ساتھ بڑھتے چلے گئے اور اب دُم کی شکل اختیار کر چکے ہیں۔

'دُم دار' بچے کے والد اجمر سنگھ کا کہنا ہے کہ عمار سنگھ ہندو مت کے پیروکاروں میں مقبول ہے اور لوگ اسے دیوتا کی "علامت" کے طور پر دیکھتے ہیں۔

دوسری جانب ڈاکٹروں نے بچے کی پیدائش کے وقت ہی بتایا تھا کہ اس کے حمل کے ابتدائی ایام میں اس کی ریڑھ کی ہڈی میں نقص پیدا ہو گیا تھا، جس کے باعث اس کے کی کمر اور دھڑ کے درمیان پٹھوں کا مضبوط تعلق قائم نہیں ہو سکا۔ کمر پر بال اگنے کی طبی وجہ بھی یہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں