بیوی کو تھپڑ رسید کرنے پر سعودی کو ایک دن قید کی سزا

''ملزم''کو آیندہ بیوی پر تشدد نہ کرنے کی ہدایت،وکیل استغاثہ کا فیصلے پر اعتراض

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ساحلی شہر جدہ میں ایک سمری عدالت نے ایک شخص کو اپنی بیوی کو چہرے پر دو تھپڑ رسید کرنے کے الزام میں ایک دن جیل کی سزا سنائی ہے۔

سعودی گزٹ میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق عدالت نے بیوی کے نجی حق سے متعلق دعوے کو مسترد کردیا ہے۔البتہ اس نے خاوند کو خبردار کیا ہے کہ وہ آیندہ کبھی اپنی بیوی کو نہ مارے۔

بیوی نے عدالت میں دائر کردہ درخواست میں کہا تھا کہ اس کے خاوند نے اسے شدید مارا پیٹا اور اس کے بائِیں کندھے پر ضرب لگائی ہے۔اس نے اپنے دعوے کے حق میں عدالت میں ایک میڈیکل رپورٹ بھی پیش کی تھی۔اس رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ اگر کوئی اور پیچیدگی پیدا نہیں ہوتی تو پھر اس کو تین دن تک علاج کی ضرورت ہوگی۔

تاہم خاوند نے عدالت میں اپنی بیوی کے اس دعوے کو مسترد کردیا کہ اس نے اس کو کندھے پر ضرب لگائی ہے۔البتہ اس نے بیوی کو چہرے پر دو تھپڑ مارنے کا اعتراف کیا تھا۔

اس سعودی خاتون کے وکیل اور جنرل پراسیکیوٹر نے عدالت کے فیصلے پر اعتراض کیا ہے لیکن جج نے انھیں اس کے خلاف اپیل دائر کرنے کے لیے تیس دن کا وقت دیا ہے۔بیوی شاید اپنے شوہر نامدار کو سنائی گئی ایک دن قید کی سزا پر مطمئن نہیں ہے اور وہ اس کو زیادہ سزا دلوانا چاہتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں