.

اسرائیلی کارپٹ بمباری سے فلسطینی کالونی ملبے کا ڈھیر

ایک گھنٹے کے اندر اندر الشجاعیہ کالونی کی اینٹ سے اینٹ بجا دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی علاقے غزہ کی پٹی پر آٹھ جولائی سے جاری وحشیانہ اسرائیلی بمباری میں تباہی اور بربادی کی ان گنت مثالیں دی جا سکتی ہیں۔ ان میں ایک تازہ مثال مشرقی غزہ کی بیت حانون کالونی کی ہے، جسے کارپٹ بمباری کر کے ایک گھنٹے میں ملبے اور انسانی لاشوں کے ڈھیر میں تبدیل کر دیا گیا۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ہفتے کے روز حماس اور اسرائیل کے درمیان 12 گھنٹے کی محدود جنگ بندی سے قبل غاصب صہیونی فوج نے الشجاعیہ کے مقام سے بیت حانون کالونی پر ٹینکوں اور لڑاکا طیاروں سے اندھا دھند بمباری کا سلسلہ شروع کیا، جس کے نتیجے میں کالونی کے تمام رہائشی پلازے اور دیگر عمارتیں ملبے کے ڈھیر میں تبدیل ہو گئیں۔ بمباری میں کم سے کم 72 فلسطینی شہید اور سیکڑوں زخمی ہوئے۔ اس وحشیانہ کارروائی کے بعد اسرائیلی وزیر دفاع موشے یعلون نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ مشرقی غزہ میں اسرائیلی فوج کے زخمی اور ہلاک ہونے والے فوجیوں کو نکالنے کے لیے بیت حانون کالونی پر کارپٹ بمباری ضروری تھی۔

العربیہ ٹی وی نے بیت حانون کی ہنستی بستی کالونی کو بارود کی بارش سے اجاڑ دینے سے ایک گھنٹہ قبل اور تباہی کے بعد کی فوٹیج نشر کی ہے، جس میں اسرائیلی فوج کی بربریت کو واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے۔

بمباری سے فلسطینیوں کے رہائشی پلازوں اور دیگر عمارتوں کو چن چن کر توپ خانے اور فضائی بمباری کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ آگ کے شعلوں، دھوئیں کے بادلوں اور معصوم شہریوں کی چیخ پکار میں پوری کالونی کے مکانات یکے بعد دیگر ملبے کے ڈھیر میں تبدیل ہوتے جاتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق غزہ کی پٹی میں بیت حانون اس نوعیت کی وحشیانہ گولہ باری سے تباہ ہونے والی پہلی اور آخری کالونی نہیں بلکہ غزہ کے کئی علاقے بھی صہیونی فوج کی بربریت کا اسی طرح نشانہ بن رہے ہیں۔