ترک پارلیمان میں دھینگا مشتی ،تین ارکان زخمی

عراق اور شام جانے والے جہادیوں کے مسئلے پر بحث کے دوران ارکان باہم گتھم گتھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی کی پارلیمان میں حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے درمیان تندوتیز مباحثے کے دوران لڑائی ہوگئی ہے جس کے نتیجے میں تین ارکان زخمی ہوگئے ہیں۔

سوموار کو انقرہ میں پارلیمان کے اجلاس میں عراق اور شام میں جاری جنگوں میں شرکت کے لیے جانے والے ترک جہادیوں کے خلاف تحقیقات شروع کرنے کے مسئلے پر بحث جاری تھی۔اس دوران وزیراعظم رجب طیب ایردوآن کی جماعت عدل اور ترقی پارٹی اور حزب اختلاف کی قوم پرست جماعت سے تعلق رکھنے والے ارکان آپس میں گتھم گتھا ہوگئے جس کے بعد سپیکر نے کل منگل تک کے لیے اجلاس ملتوی کردیا ہے۔

ترکی کی دوغان نیوز ایجنسی کی اطلاع کے مطابق لڑائی کے دوران تین ارکان زخمی ہوئے ہیں۔تاہم اس نے یہ نہیں بتایا کہ ان تینوں میں سے حزب اختلاف اور حکمراں جماعت سے کون کون سا رکن تعلق رکھتا ہے۔پارلیمان میں یہ دھینگا مشتی ترکی میں صدارتی انتخابات کے انعقاد سے چند روز قبل ہی ہوئی ہے۔

قبل ازیں فروری میں بھی پارلیمان میں حزب اقتدار اور حزب اختلاف کے ارکان کے درمیان حکومت کی عدلیہ پر گرفت مضبوط بنانے سے متعلق معاملے قانون سازی پر گرما گرم بحث کے دوران لڑائی ہوگئی تھی اور دو ارکان کو زخمی ہوکر اسپتال داخل ہونا پڑا تھا۔ان میں سے ایک کی ناک کی ہڈی اور ایک کی انگلی ٹوٹ گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں