.

نابینا شخص کو ریلوے لائن پر دھکا، دو افراد کو قید کی سزا

دلخراش واقعہ برطانیہ کے ایک ریلوے اسٹیشن پر پیش آیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مغربی ملکوں میں جہاں انسانیت اور انسانی حقوق کی اہمیت کا بہت ڈھنڈورا پیٹا جاتا ہے بعض اوقات ایسے واقعات بھی دیکھنے میں آتے ہیں جن سے ان کے انسان ہونے میں بھی شبہ ہوتا ہے۔

ایسا ہی ایک دلخراش واقعہ گذشتہ فروری میں برطانیہ میں پیش آیا جہاں دو منچلوں نے ایک نابینا اور بہرے شخص کو ریل کی پٹری پر دھکا دے دیا۔ نابینا شخص کا بھائی اسے بچانے کے آگے بڑھا تو دونوں نے اسے بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔ پولیس نے دونوں ملزمان کو حراست میں لے کر ان کے خلاف عدالت میں مقدمہ چلایا۔ عدالت نے ایک ملزم کو 22 اور دوسرے کو 09 قید کی سزا سنائی ہے۔

اخبار ’’ایوننگ اسٹینڈرڈ‘‘ کے مطابق 23 سالہ ڈینیل ویسٹر ریلوے کے چیلم سفوڈ اسٹیشن پر گاڑی کے انتظار میں بیٹھا تھا۔ اس کے قریب ہی اکتیس سالہ شخص بھی انتظار میں کھڑا تھا جو بصارت سے محروم تھا۔ ویسٹر اور اس کے دوست نیل مارٹن نے اندھے اور بہرے شخص کو تشدد کا نشانہ بنایا، تمام رہ گیروں کے سامنے اسے گالیاں دیں اور اسی اثنا پکڑ کر ریلوے لائن پر پھینک دیا۔

نابینا شخص کے بھائی نے اسے بچانے کی کوشش کی مگر دونوں سفاک لڑکوں نے اسے بھی تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔ تاہم وہ دیگر راہ گیروں کی مدد سے نابینا بھائی کو ریلوے پٹڑی سے باہر نکالنے میں کامیاب ہو گیا۔

بعد ازاں پولیس نے دونوں ملزمان کو حراست میں لے لیا۔ ان کے خلاف چلائے گئے مقدمہ میں معاون تفتیش کار آلن ریڈ نے بتایا کہ یہ واقعہ بیس فروری کو پیش آیا جسے پولیس ریکارڈ میں بدترین واقعات میں شامل کیا گیا ہے۔ عدالت نے ویسٹر وک 22 ماہ اور اس کے ساتھ نیل مارٹن کو نو ماہ قید کی سزا سنائی ہے۔

اخباری رپورٹ کے مطابق تشدد کا نشانہ بننے والے بھائیوں میں سے ایک کے زخم ابھی تک ٹھیک نہیں ہو سکے۔