.

جنوبی افریقا کی دوشیزہ حسینہ عالم منتخب

ہنگری اور امریکا کی حسینائیں رنرر اپ قرار پائیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لندن میں ہونے والے عالمی مقابلہ حسن 2014ء کا ٹائٹل جنوبی افریقا کی حسینہ رولین اسٹرؤس نے جیت کر مس ورلڈ کا تاج اپنے سر پر سجایا لیا۔ روایت کے مطابق سابقہ مس ورلڈ، فلپائنی حسینہ میگن ینگ نے اُنھیں اپنے ہاتھوں سے مس ورلڈ کا تاج پہنایا۔

مس ورلڈ کے فائنل مقابلے میں 120 حسیناؤں کو مات دے کر حسن کی ملکہ کا اعزاز پانے والی 22 سالہ رولین اسٹرؤس ملکہ حسن کا تاج سر پر پہن کر دلوں پر بجلیاں گراتی رہیں جبکہ مقابلے میں شریک حسیناؤں کی جانب سے مبارک سلامت بھی سمیٹتی رہیں۔

مس ورلڈ کا انتخاب فائنل مقابلے میں پانچ ملکوں کی حسنیاؤں میں سے کیا گیا جن میں سے قرعہ فال مس جنوبی افریقا کے نام کی نکلا۔ رنر اپ حسینہ کا اعزاز مس ہنگری ایڈینا کولکسار نے حاصل کیا اور عالمی مقابلہ حسن کے تیسرے تاج کی حقدار امریکی حسینہ ایلزیبتھ سیفرٹ کو ٹہرایا گیا۔

رولین اسٹرؤس کی شخصیت خوبصورتی اور ذہانت کی بہترین مثال ہے۔ وہ فری اسٹیٹ یونیورسٹی میں میڈیسن کے چوتھے سال میں ہیں، اور ساتھ ہی، ایم بی اے کی تعلیم حاصل کر کے بزنس کرنے کا ارادہ بھی رکھتی ہیں۔

مس ورلڈ مقابلہ حسن 20 نومبر سے لندن میں شروع ہوا، جس میں دنیا بھر کے مختلف ممالک سےتعلق رکھنے والی 120 حسیناؤں نے حصہ لیا۔ تین ہفتوں تک جاری رہنے والے مقابلے کی فائنل تقریب 14 دسمبر کو ایکسل لندن ایگزیبیشن اینڈ کنونشن ہال میں منعقد ہوئی۔

مس ورلڈ کے 46 واں ایڈیشن کی فائنل تقریب کی میزبانی کے فرائض سابقہ مس ورلڈ میگن ینگ اور فرانکی سینا نے ادا کئے۔ مس ورلڈ مقابلے کی فائنل تقریب جو کہ براہ راست نشر کی گئی دنیا کے بیشتر ممالک میں دیکھی گئی۔

اگرچہ رواں برس مس ورلڈ مقابلے کی تمام کیٹگریز میں مضبوط امیدوار نظر آنے والی مس انڈیا کوئل رانا نے فائنل مقابلے میں ٹاپ 10 میں بھی نمایاں پوزیشن حاصل کی لیکن، ٹاپ 5 حسینہ کے طور پر وہ ججوں کو متاثر نہیں کر سکیں۔

فائنل مقابلے کی اس شاندار تقریب میں سابقہ مس ورلڈ ممتاز بھارتی اداکارہ ایشوریہ رائے اپنے شوہر، اداکار ابھیشک بچن اور بیٹی ارادھیا کے ساتھ شریک ہوئیں۔

مس ورلڈ کی فائنلسٹ کا انتخاب ججوں کی جانب سے مقابلہ حسن کے چھ مختلف مقابلوں کی پرفارمنس کو دیکھتے ہوئےکیا جاتا ہے جبکہ مس ورلڈ کا انتخاب ججوں کی متفقہ رائے سے کیا جاتا ہے۔