.

مسجد نبوی کی خادمات کے لئے دوران ملازمت حمل ممنوع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مسجد نبوی کی انتظامیہ نے حرم میں ملازمت کرنے والی خواتین کے لیے ملازمت کے عرصے میں حاملہ ہونے پرپابندی عاید کی ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ خواتین کے حاملہ ہونے پر پابندی ان کی سخت ڈیوٹی کے پیش نظر لگائی گئی ہے کیونکہ انہیں ڈیوٹی کے دوران مسلسل حرکت میں اور کام میں مصروف رہنا پڑتا ہے جبکہ حمل میں خواتین زیادہ بھاری کام کی متحمل نہیں ہو سکتیں۔

سعودی اخبار’’الوطن‘‘ کے مطابق حرم نبوی کی انتظامیہ کی جانب سے خبردار کیا گیا ہے کہ دوران ملازمت خواتین حاملہ نہ ہوں۔ اگراس عرصے میں کوئی خاتون اہلکار حاملہ ہوئی تو اسے اپنی ملازمت کی مدت پوری ہونے سے قبل ہی نکال دیا جائے گا اور اس کی جانب سے زچگی کے بعد نوکری کی درخواست بھی قبول نہیں کی جائے گی۔

حکام کا مزید کہنا ہے کہ خواتین کے حمل پر پابندی کا فیصلہ مفاد عامہ کی خاطر کیا گیا ہے تاکہ ڈیوٹی کے دوران خواتین چوکس رہتے ہوئے اپنی فرائض منصبی انجام دیں اور ان کی ذمہ داریوں کی انجام دہی میں کوئی فطری اور غیر فطری امر مانع نہ ہو۔

نئی خواتین کی بھرتی کے وقت بھی انہیں یہ عہد لیا جائے گا کہ وہ ملازمت کے مقررہ عرصے کے دوران حاملہ نہیں ہوں گی۔