.

خامنہ ای کی انسٹاگرام پر 15 سیکنڈ سے طویل ویڈیوز

ایرانی رہبر کے اکاؤنٹ سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کے قواعد کی خلاف ورزی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا کی ویب سائٹ انسٹاگرام نے اپنے صارفین کے لیے صرف پندرہ سیکنڈ تک دورانیے کی ویڈیو اپ لوڈ کرنے کی پالیسی وضع کررکھی ہے لیکن ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کو اس معاملے میں شاید استثنیٰ حاصل ہے یا وہ انسٹاگرام کے 2013ء میں وضع کردہ قاعدے کو کامیابی سے توڑنے میں کامیاب ہوگئے ہیں کہ ان کی 91 سیکنڈز تک ویڈیوز ان کے اکاؤنٹ پر موجود ہیں۔اس پر دوسروں کے علاوہ خود ایرانی بھی حیران وپریشاں ہیں کہ ایسا سب کچھ کیسے ہورہا ہے۔

برطانوی اخبار گارجین کی رپورٹ کے مطابق ایران کے سپریم لیڈر کے ساتھ سماجی رابطے کی ویب سائٹ کی جانب سے کوئی خصوصی سلوک نہیں کیا جارہا ہے بلکہ ایک سُقم کی وجہ سے صارفین پندرہ سیکنڈ سے زیادہ دورانیے کی ویڈیوز اپ لوڈ کرسکتے ہیں۔ایرانی رہبر کا اکاؤنٹ چلانے والوں نے بھی اس سے فائدہ اٹھایا ہے۔

فیس بُک کی ملکیتی سائٹ کی جانب سے اس کی یہ وضاحت بتائی گئی ہے کہ ''ہمیں حال ہی میں ایک بگ کا پتا چلا تھا جس کے ذریعے صارفین انسٹا گرام پر پندرہ سیکنڈ سے زیادہ دورانیے کی ویڈیو پوسٹ کرتے رہے ہیں۔ہم نے فوری طور پر اس پر کام کرتے ہوئے اس بگ کا مسئلہ حل کردیا ہے''۔

برطانوی روزنامے نے بتایا ہے کہ میڈیا کی ایک جلا وطنی شخصیت نے سب سے پہلے ایرانی رہبر کی غیر معمولی طویل ویڈیوز کی نشان دہی کی تھی اور ایک ٹویٹ میں یہ سوال اٹھایا تھا کہ علی خامنہ ای کیسے مقررہ دورانیے سے لمبی ویڈیوز اپ کررہے ہیں۔

انسٹا گرام کے اس دعوے کے باوجود کہ اس مسئلے کو حل کردیا گیا ہے،آیت اللہ علی خامنہ ای کی طویل دورانیے کی ویڈیوز ابھی تک ان کے اکاؤنٹ پر موجود ہیں۔اس اکاؤنٹ کو خامنہ ای کا دفتر چلاتا ہے اور اس نے اب تک ایک ہزار سے زیادہ پوسٹس اپ لوڈ کی ہیں۔اس کے پیروکار صارفین کی تعداد دو لاکھ سے زیادہ ہے۔