.

سعودی عدالتوں میں عورتوں کے خلاف مقدمات میں اضافہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارت انصاف نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سال 2015ء کے دوران اب تک خواتین کے متشدد جرائم میں ملوث ہونے کے مقدمات میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور گذشتہ سال کے مقابلے میں ان کے مختلف النوع جرائم میں ملوث ہونے کی شرح برقرار ہے۔

عدالتی ریکارڈ کے مطابق سال 2015ء کے آغاز کے بعد سے اب تک دو سو اٹھہتر سعودی اور بیاسی غیر سعودی خواتین کے خلاف مجرمانہ حملوں کے الزام میں مقدمات دائر کیے گئے ہیں۔ 2014ء کے دوران عورتوں کے خلاف پانچ سو چونسٹھ مقدمات درج کیے گئے تھے۔اس سال ایک غیر سعودی اور تین سعودی عورتیں چاقو گھونپنے کے جرائم میں بھی ملوّث پائی گئی ہیں۔

تاہم عورتوں کے مقابلے میں مردوں کے جرائم کی شرح کہیں زیادہ ہے اور 2015ء میں اب تک مرد ملزمان کے خلاف نو ہزار چار سو اکتالیس مقدمات کی سماعت شروع کی گئی ہے۔عدالتوں نے اس سال اب تک دس سعودی اور دس غیر سعودی عورتوں کے خلاف جائیدادیں ہتھیانے یا جعل سازی سے اپنے نام کرنے کے الزام میں مقدمات چلائے ہیں۔گذشتہ سال بارہ سعودی اور بائیس غیرملکی عورتیں ایسے مقدمات میں ملوث پائی گئی تھی۔

رواں سال اب تک ایک غیر سعودی اور سولہ سعودی عورتوں کے خلاف کسی کی ذاتی املاک کو نقصان پہنچانے یا نذر آتش کرنے کے الزام میں مقدمات چلائے گئے ہیں۔گذشتہ سال پانچ سعودی اور تین غیر سعودی عورتوں کے خلاف دوسروں کی املاک کو نقصان پہنچانے کے الزام میں مقدمات چلائے گئے تھے۔

عدالتوں نے بتایا ہے کہ چھبیس سعودی اور نو غیر سعودی عورتوں پر لوگوں کو بلیک میل کرنے یا ڈرانے دھمکانے کے الزام میں فرد جرم عاید کی گئی ہے۔گذشتہ سال اس نوعیت کے مقدمات میں چوالیس سعودی اور سولہ غیرملکی عورتوں کو ماخوذ کیا گیا تھا۔

عدالتی رپورٹس کے مطابق اس سال اب تک توہین مذہب یا توہین رسالت کے الزام میں دو سو بارہ سعودی اور تیس غیر سعودی عورتوں کے خلاف مقدمات چلائے گئے ہیں۔گذشتہ سال دو سو باسٹھ سعودی اور تینتالیس غیر سعودی عورتوں کے خلاف توہین مذہب کے الزامات میں مقدمات چلائے گئے تھے۔

تاہم عدالتوں نے عورتوں کے خلاف آتشیں اسلحہ کے استعمال سے متعلق مقدمات میں کمی کی اطلاع دی ہے اور اس سال اب تک صرف ایک مقدمہ ایک عورت کے خلاف آتشیں اسلحہ چلانے کے الزام میں درج کیا گیا ہے جبکہ گذشتہ سال چار سعودی اور ایک غیر سعودی عورت کو اسلحہ چلانے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔