ڈنمارک: مسلمان طالبہ کو حرام گوشت کھلانے پر سکول کو جرمانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یورپی ملک ڈنمارک کی ایک عدالت نے ایک مسلم خاتون کو کورس کے حصے کے طور پر خنزیر کا گوشت کھلانے والے فن طباخی سکھانے والے سکول کو جرمانہ کردیا ہے.

ٰڈنمارک کے قصبے ہولستیبرو کے فن طباخی کے سکول کی لیبی نژاد 24 سالہ طالبہ کو دیگر طلباء وطالبات کی طرح ہی ان کے تیار کردہ کھانے کا کہا جاتا ہے.

مگر ان کھانوں میں خنزیر کا گوشت شامل تھا جو کہ اسلامی تعلیمات کے مطابق مسلمانوں کے لئے حرام قرار دیا گیا ہے. اس وجہ سے طالبہ نے یہ کھانا کھانے سے انکار کردیا.

عدالت نے طالبہ کی جانب سے مذہب کی بنیاد ہر تعصب دکھائے جانے کی شکایت کے بعد سکول کو 40 ہزار ڈینش کرونز [چھ لاکھ پاکستانی روپے] کا جرمانہ کیا.

مسلمان طالبہ کے مطابق اسے آگاہ کیا گیا تھا کہ خنزیر کا گوشت اور شراب کھانے میں استعمال کی جائیگی مگر انہیں اس بات کی اطلاع نہیں دی گئی تھی کہ تیار شدہ کھانوں کو چکھنا لازمی ہوگا.

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں